یواے ای:نجی کمپنیوں میں گذشتہ تین ماہ 10,500 سے زیادہ مقامی شہریوں کی بھرتی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کے حکام نے انکشاف کیا ہے کہ 2023 کے پہلے تین ماہ میں 10,500 سے زیادہ اماراتیوں کونجی شعبے کی کمپنیوں میں بھرتی کیا گیا ہے۔

وزارت انسانی وسائل اورامارات (ایم او ایچ آر ای) نے بتایا کہ 2022 کی پہلی سہ ماہی کے مقابلے میں اماراتی شہریوں کی افرادی قوت میں شمولیت میں11 فی صد اضافہ ہواہے۔

اس اضافے کے بعد نجی شعبے میں 16,000 سے زیادہ کمپنیوں میں اماراتی ملازمین کی مجموعی تعداد 66،000 سے زیادہ ہوگئی ہے۔

متحدہ عرب امارات پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے ذریعے اقتصادی ترقی پر کام کرتا ہے اورملازمتوں کی منڈی میں خاص طور پر نجی شعبے میں اماراتیوں کے کردارکوبڑھانے کے لیےاہدافی اقدامات پرعمل درآمد کا خواہاں ہے۔

وزارت کے بیان میں مزیدکہاگیا ہے کہ ہم توقع کر رہے ہیں کہ اگلے دوماہ میں اماراتیوں کوملازمت دینے کی رفتار مضبوط ہوجائے گی کیونکہ 50 یااس سے زیادہ ملازمین والی نجی شعبے کی کمپنیوں کے لیے ایک فی صد نیم سالانہ اماراتی ہدف کو حاصل کرنے کی آخری تاریخ 30 جون 2023 ہوگی۔

اماراتیوں کی خدمات حاصل کرنے والے پانچ بڑے شعبوں میں کاروباری خدمات (10 فی صد اضافہ)، تجارت اور مرمت کی خدمات (13 فی صد اضافہ)، تعمیرات (14 فی صد بڑھوتری)، مالیاتی بروکریج (چارفی صد اضافہ) اور مینوفیکچرنگ (14 فی صد اضافہ) شامل ہیں۔

یواے ای میں یکم جنوری 2023 تک 50 سے زیادہ ملازمین والی کمپنیوں نے اس بات کو یقینی بنایا ہوگا کہ ان کے عملہ میں کم سے کم دو فی صد اماراتی شہری ہوں تاکہ زیادہ سے زیادہ شہریوں کو نجی شعبے میں شامل ہونے کی ترغیب دی جا سکے۔

اگرکوئی آجرہدف حاصل کرنے میں ناکام رہتا ہے تو اسے ملازمت پر رکھے جانے والے ہراماراتی کارکن کے بدلے میں قریباً 20ہزار ڈالرجرمانہ ادا کرنا ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں