سوڈان میں مصری سفارت خانہ کےعملہ کے رکن کو گولی ماردی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرکی وزارتِ خارجہ کے ترجمان احمد ابوزید نے اتوار کے روزاطلاع دی ہے کہ سوڈان (السودان) میں مصری سفارت خانہ کے عملہ کے ایک رکن کوگولی ماردی گئی ہے۔

ابوزید نے یہ واضح نہیں کیا کہ یہ واقعہ کب پیش آیا اوراس میں کس کے ملوث ہونے کا شبہ ہے لیکن ان کا کہنا ہے کہ تشدد کا یہ واقعہ اس بات کا متقاضی ہے کہ سوڈان میں ہمارے شہریوں اور ہمارے مشن کے ارکان کی حفاظت کے لیے انتہائی احتیاط برتنے کی ضرورت ہے۔

ابو زید نے یہ بھی کہاکہ مصرجیسے ممالک،جن کے سوڈان میں بہت سے شہری ہیں، کو ایک محفوظ اور منظم منصوبے کی ضرورت ہے تاکہ ان شہریوں کے محفوظ انخلاکویقینی بنایا جاسکے۔

انھوں نے مصری سفارت کاروں پربھی زوردیا کہ ان کی اخلاقیات کا تقاضا ہے کہ وہ سوڈان چھوڑنے کے خواہش مند افراد کے انخلا کے عمل کی تکمیل کو یقینی بنائیں اور وہ میدان (سوڈان) چھوڑنے والے آخری شخص ہوں۔

سوڈان کے آرمی چیف عبدالفتاح البرہان کے زیرقیادت مسلح افواج اور ان کے سابق نائب محمد حمدان دقلو کی سریع الحرکت فورسز (آر ایس ایف) کے درمیان مسلح لڑائی دوسرے ہفتے میں داخل ہوگئی ہے۔ان کے درمیان آرایس ایف کے فوج میں انضمام کے منصوبے پرمسلح تنازع شروع ہواتھا۔

مصرکے سوڈان میں 10,000 سے زیادہ شہری ہیں۔اس نے اتوارکو خرطوم سے باہر دوسرے شہروں میں مقیم اپنے شہریوں پرزوردیا کہ وہ پورٹ سوڈان میں اپنے قونصل خانے اور مصر کی سرحد پر وادی ہالا میں قونصلردفترسے رجوع کریں تاکہ ان کے انخلا کی تیاری کی جا سکے۔ اس نے خرطوم میں مقیم مصریوں کو بھی ہدایت کی ہے کہ وہ محفوظ مقامات میں پناہ لیں اور صورت حال میں بہتری کا انتظارکریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں