مصر میں ہراسانی میں ملوث اہلکاروں کو سات سال قید کی سزا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر نے 1937 کے قانون نمبر 58 کے ذریعے نافذ پینل کوڈ میں ترمیم مکمل کرنے کے بعد ملازمت یا تعلیمی اختیار کا غلط استعمال کرنے والےسرکاری اہلکاروں کےلیے ہراسانی کی سزا بڑھا کر 7 سال قید اور 50 لاکھ پاؤنڈ جرمانہ کی سزا مقرر کی ہے۔

جنسی ہراسانی سے متعلق پینل کوڈ میں ترمیمی مسودہ قانون کے مطابق اگرمجرم اس قانون کے آرٹیکل 267 کے دوسرے پیراگراف میں بیان کردہ ضوابط کی خلاف ورزی کرتا ہے، یا اس کے پاس عہدہ ہے اور اس نے متاثرہ شخص کے خلاف اس کا استعمال کیا ہے یا اس نے متاثرہ شخص پر دباؤ ڈالا ہے تو ایسی صورتوں میں سات سال قید اور کم سے کم تین لاکھ اور زیادہ سے زیادہ پانچ لاکھ پاؤنڈ جرمانہ کیا گیا ہے۔

جب کہ آرٹیکل 306 (a) میں ترمیم کے متن میں یہ شرط عائد کی گئی ہے کہ جو کوئی بھی کسی عوامی، نجی یا کھلی جگہ پر دوسروں پر حملہ کرتا ہے اسے دو سال سے چار سال سے زیادہ قید کی سزا اور ایک لاکھ سے دو لاکھ پاؤنڈ جرمانہ ہوگا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں