سوڈان سے انخلا؛ سب سے بڑی کھیپ کی شاہ فیصل نیول بیس آمد، مسافروں کا استقبال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی مساعی سے خانہ جنگی کا شکار سوڈان سے غیرملکیوں کے انخلاءکا عمل جاری ہے۔

آج بدھ کی صبح سوڈان سے بحری انخلاء کا تیسرا قافلہ تقریباً 8 گھنٹے کے سفر کے جدہ کے شاہ فیصل نیول بیس پر پہنچا۔

جدہ میں شاہ فیصل نیول بیس پر سوڈان سے اب تک کے سب سے بڑے انخلا کے آپریشن کے مسافروں کا پھولوں اور مٹھائیوں کے ساتھ استقبال کیا گیا۔ بحری جہاز "امانہ" کے مسافروں کی جانب تالیاں بجا کر سعودی سکیورٹی فورسز کا شکریہ ادا کیا گیا۔

بحری جہاز "امانہ" سعودی بحری افواج کی حفاظت میں 58 ملکون کے 1,687 افراد کو لے کر پہنچا تھا۔اس کا استقبال متعدد حکام، سفیروں اور بعض سفارتی مشنز کے نمائندوں نے کیا۔

"العربیہ" اور "الحدث" کی کیمرہ ٹیم جدہ میں لنگرانداز ہوتے وقت جہاز پر موجود تھی، جہاں جہاز کے متعدد مسافروں نےالعربیہ کی ٹیم کو سوڈان میں درپیش مصائب کے بارے میں بتایا۔

سوڈان سے انخلا کرنے والوں میں جہاز پر 46 امریکی، 40 برطانوی، 11 جرمن، 4 فرانسیسی اور 13 سعودیوں کے علاوہ 560 انڈونیشی، 239 یمنی، 198 سوڈانی اور 26 ترک باشندے سوار تھے۔

سوڈان سے سعودی عرب پہنچنے والی یہ انخلاء کی تیسری کھیپ ہے۔

ایک سرکاری بیان میں سعودی وزارت خارجہ نے اعلان کیا کہ سوڈان میں تشدد سے فرار ہونے والے 1,687 شہریوں کو لے کر جہاز بدھ کے روز سعودی عرب پہنچا تھا۔

وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ اس گروپ کو "مملکت کے بحری جہازوں میں سے ایک کے ذریعے" منتقل کیا گیا۔ غیر ملکی شہریوں کی ان کے ممالک کو روانگی کی تیاری کے لیے تمام بنیادی ضروریات سہولیات فراہم کی گئیں۔

کل منگل کو خلیج تعاون کونسل کے سیکرٹری جنرل جاسم محمد البداوی نے سعودی عرب کے سوڈان سے اپنے شہریوں اور خلیج کے متعدد ملکوں کے شہریوں کو نکالنے کے عمل میں فراہم کیے گئے عظیم سفارتی اور لاجسٹک کردار کی تعریف کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں