ناقابل تصور جرم، ماں اپنے بچے کو ذبح کر کے اس کی لاش پکا کر کھا گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے ایک گاؤں میں دل دہلا دینے والا واقعہ دیکھنے میں آیا، جہاں ایک ذہنی مریض ماں نے اپنے بچے کو ذبح کر کے اس کی لاش کو پکا کر کھا لیا۔

گورنری شرقیہ میں واقع فاقوس سنٹر سے منسلک ابو شلبی گاؤں میں دل دہلا دینے والا واقعہ پیش آیا جہاں ماں نے اپنے 5 سالہ بچے کو قتل کیا، اس کی لاش کو پکایا اور اس کے کچھ حصے کھا گئی۔

ملزمہ کا اعتراف جرم

سکیورٹی ذرائع نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ مشتبہ قاتلہ خاتون کا نام ھنا اور اس کی عمر 30 سال ہے۔ اس نے اعتراف کیا کہ اس نے یہ گھناؤنا جرم اس وقت کیا جب وہ ہوش کھو بیٹھی، کیونکہ وہ مرگی اور کئی دیگر نفسیاتی امراض میں مبتلا تھی۔ "

اقبالی بیان کے دوران وہ مشکل سے بول رہی تھی، ماں نے کہا کہ وہ اپنے بچے کے بارے میں پریشان تھی اور اسے دوبارہ اپنے پیٹ میں ڈالنا چاہتی تھی۔ اس لیے اس نے اسے ذبح کرنے کا فیصلہ کیا اور اسے کاٹ کر کھانا پکانے کے بعد کھایا۔ اسے اس کے پیٹ میں لوٹا دیا۔

بیٹے کے ساتھ اکیلی

سکیورٹی تحقیقات سے پتہ چلا کہ خاتون تقریباً تین سال سے اپنے شوہر سے الگ تھی اور وہ گاؤں میں اپنے ہی گھر میں اپنے بیٹے کے ساتھ اکیلی رہ رہی تھی۔

ماں کو پبلک پراسیکیوشن آفس کے حوالے کیا گیا ہے جہاں اس کے خلاف مزید قانونی کارروائی کی جا رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں