ایران کے صدرابراہیم رئیسی بدھ سے شام کا دوروزہ دورہ کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کے صدر ابراہیم رئیسی شامی صدربشارالاسد کی دعوت پر بدھ سے دمشق کا دو روزہ سرکاری دورہ کریں گے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی ارنانےاتوارکے روز شام میں ایران کے سفیرحسین اکبری کے حوالےسے بتایا ہے کہ رئیسی کا آیندہ بدھ کو دمشق کا دورہ خطے میں رونما ہونے والی تبدیلیوں اور پیش رفت کی وجہ سے اہمیت کاحامل ہے۔

یہ دورہ علاقائی حریفوں ایران اور سعودی عرب کے درمیان چین کی ثالثی میں مفاہمت طے پانے اور دمشق کے ساتھ عرب روابط میں اضافے کے پس منظرمیں ہورہاہے۔

ایرانی سفیرنے کہا کہ یہ دورہ نہ صرف تہران اور دمشق کے لیے فائدہ مند ہوگا بلکہ اس موقع سے خطے کے دیگر ممالک بھی فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

شام میں2011ء میں خانہ جنگی چھڑنے کے بعد کسی ایرانی صدرکا دمشق کا یہ پہلا دورہ ہوگا۔اس سے پہلے ستمبر2010 میں سابق ایرانی صدر محمود احمدی نژاد نے شامی دارالحکومت کا دورہ کیا تھا۔

ایران شامی صدربشارالاسد کا ایک اہم اتحادی ہے اوراس نے شام کے 12 سالہ تنازع کے دوران میں ان کی حکومت کو مالی اور فوجی مدد مہیّاکی ہے۔اس کے علاوہ ایران اسد حکومت کی باقاعدہ مسلح افواج کے شانہ بشانہ لڑنے والے متعددشامی اورغیرملکی ملیشیا گروپوں کی مالی اعانت کرتا،انھیں اسلحہ مہیا کرتا اوران کی کمان کرتا ہے۔ان میں لبنان کی حزب اللہ ملیشیا بھی شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں