سوڈان سے شہریوں کو لے کر دوسرا قافلہ امریکہ پہنچ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی محکمہ خارجہ نے اتوار کو کہا کہ پورٹ سوڈان میں دوسرے سمندری قافلے کی آمد کے ساتھ ہی امریکی حکومت نے تقریباً 1,000 امریکیوں کو سوڈان سے نکلنے میں مدد فراہم کردی ہے۔

محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر نے ایک بیان میں کہا کہ ہم امریکی شہریوں اور دیگر افراد کی مدد کرتے رہتے ہیں۔ ان افراد میں وہ بھی شامل ہیں جو جدہ سعودی عرب کے آگے سفر کے اہل ہیں۔ جدہ میں ہنگامی خدمات کے لیے اضافی امریکی اہلکار تعینات ہیں۔

ہفتہ کے روز امریکہ کا ایک منظم قافلہ پورٹ سوڈان پہنچا جس میں امریکی شہریوں، مقامی عملے اور اتحادی ملکوں کے شہریوں کو سعودی عرب جانے کے لیے لایا گیا۔

میتھیو ملر نے بتایا کہ امریکہ انخلا کی پروازوں اور قافلوں پر شراکت دار ملکوں کے ساتھ قریبی رابطہ میں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 5 ہزار سے کم امریکی شہریوں تک پہنچنے کے لیے ایک مستقل سفارتی اور پیغام رسانی کی کوشش کی گئی ہے۔ ان شہریوں نے حکومت سے رہنمائی حاصل کی ہے۔

سریع الحرکت فورسز اور سوڈانی فوج کے درمیان جھڑپوں کے دوران امریکی شہری بندرگاہ سے انخلاء کے لیے پہنچ رہے ہیں۔ (رائٹرز)
سریع الحرکت فورسز اور سوڈانی فوج کے درمیان جھڑپوں کے دوران امریکی شہری بندرگاہ سے انخلاء کے لیے پہنچ رہے ہیں۔ (رائٹرز)

واضح رہے سوڈان میں 15 اپریل سے جنرل عبد الفتاح البرہان کی سربراہی میں فوج اور ان کے سابق نائب جنرل محمد حمدان دقلو کی سربراہی میں نیم فوجی یا پیرا ملٹری گروپ ’’ریپڈ سپورٹ فورسز‘‘ کے درمیان جھڑپیں شروع ہیں۔

سوڈان کے دارالحکومت خرطوم میں اتوار کو بھی پرتشدد جھڑپیں جاری ہیں۔ دونوں متحارب فریقوں کی جانب سے جنگ بندی میں توسیع کے ساتھ ساتھ لڑائی بھی جاری دکھائی دے رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں