سعودی بحیرۂ احمرگلوبل کامیگاپروجیکٹ کے مہمانوں کے لیےنیا ایڈونچراسپورٹس برانڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی ڈویلپربحیرۂ احمرگلوبل (آرایس جی) نےایک نیاایڈونچراسپورٹس برانڈ’اکون‘لانچ کرنے کا اعلان کیا ہے۔یہ آنے والے پُرتعیش ماحولیاتی سیاحتی مقام پر آنے والے مہمانوں کوتفریحی مواقع مہیا کرے گا۔

پروجیکٹ ڈویلپرنے میڈیاکوایک بیان میں کہا کہ تازہ ترین پیش کش واٹراسپورٹس اورڈائیونگ برانڈز’واما‘ اور‘گیلکسیا‘میں ایک نیا اضافہ ہوگی۔

اَکون، جس کامطلب ہے’’ہونا‘‘،آر ایس جی کے مقامات پرایڈونچراورکھیلوں کے تجربات کا انتظام کرے گا، بشمول بجری، پہاڑ، موٹے ٹائر اور برقی بائیکنگ، اس کے علاوہ ٹریل رننگ اورہائیکنگ کا بندوبست کرے گا۔

آر ایس جی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ سرگرمیاں "ہر منزل میں مقامی برادریوں کے ساتھ قریبی طور پر منسلک ہوں گی، تحفظ اور ثقافتی راستوں کو تیار کرنے کے لیے کام کریں گی اوران قدیم زمینوں کی ناقابل یقین کہانیاں سنائیں گی۔

اَکون بنیادی طورپائیداری کے ساتھ کام کرے گا اور مقامی ماحول کے تحفظ اوراسے بہتر بنانے کے لیے تجدیدی عزائم کے مطابق کام کرے گا۔ آر ایس جی گروپ کے سی ای او جان پگانو کا کہنا ہے کہ واما آبی کھیلوں کی مہم جوئی کو تقویت بخشنے کی ذمہ دار ہے، جس میں منزل کے مینگروو جنگلات میں اسٹینڈ اپ پیڈل بورڈنگ سے لے کر بحیرہ احمر کے نرم ساحلوں پر کشتی رانی تک شامل ہے، جبکہ گیلکسیا غوطہ خوری کے تجربات پیش کرے گا جس سے مہمانوں کو پانی کے نیچے کی بیش قیمت سمندری زندگی کو دریافت کرنے میں مدد ملے گی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اَکون نے آپریٹرز بنگی نیوزی لینڈ اور ایئراسپورٹس گروپ کے ساتھ ابتدائی شراکت داری کے دو معاہدوں پردست خط کیے ہیں،جو دونوں آر ایس جی مقامات پر ایڈونچر سیاحت کی زبردست صلاحیت کا جائزہ لیں گے۔

توقع ہے کہ ایئر اسپورٹس گروپ 13 ہفتوں تک جگہ کا جائزہ لے گا تاکہ امالااور بحیرہ احمر دونوں میں فضائی کھیلوں کی صلاحیت کا پتالگایا جاسکے ، جس میں اسکائی ڈائیونگ ، پیراگلائیڈنگ ، پیراموٹرنگ اور ہاٹ ایئربلوننگ شامل ہیں۔

دریں اثنا ، بنگی نیوزی لینڈ انفرادی مہمانوں کے تجربات کے لیے مجموعی مہم جوسیاحت کے منصوبے اور تصور کے ڈیزائن کو تیار کرنے پر توجہ مرکوز کرے گا۔

آر ایس جی دنیا کے سب سے زیادہ پرجوش تجدیدی سیاحتی مقامات ، بحیرہ احمر اور امالا سے پیچھے ہے۔ یہ ایک بند مشترکہ اسٹاک کمپنی ہے جو مکمل طور پر سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ (پی آئی ایف) کی ملکیت ہے۔ یہ کمپنی بحیرۂ احمر کے خطے کو پائیدار طور پر ترقی دے کر اپنی معیشت کو متنوع بنانے کے سعودی عرب کے ویژن 2030 کے عزائم کا ایک سنگ بنیاد ہے۔

بحیرۂ احمرکامنصوبہ سعودی عرب کے مغربی ساحل کے ساتھ ایک سیاحتی مقام ہے اور سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی طرف سے 2017 میں اعلان کردہ تین گیگا منصوبوں میں سے ایک ہے۔

اسے ایک پُرتعیّش سیاحتی مقام بننے کے لیے ڈیزائن کیاجارہا ہے جو پائیدار ترقی میں نئے معیارقائم کرتے ہوئے فطرت، ثقافت اور مہم جوئی کو اپنائے گا۔یہ منصوبہ سعودی عرب کے بحیرہ احمر کے ساحل پر 28,000 مربع کلومیٹرپرپھیلا ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں