سعودی عرب نے عمرہ ویزے پرآنے والے سوڈانیوں کی اقامتی مدت میں توسیع کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے عمرے کے ویزے پرآنے والے سوڈانی زائرین کی اقامتی مدت میں توسیع شروع کردی ہے۔سوڈان سے یہ زائرین عمرے کی نیّت سے سعودی عرب میں آئے تھے لیکن اب اپنے ملک میں جاری مسلح تنازع کی وجہ سے لوٹ نہیں سکتے ہیں۔

سعودی عرب کی وزارتِ داخلہ نے ای پورٹل پر’’ سوڈان کے عمرہ زائرین کی میزبانی" کے نام سے اس نئی سروس کا آغاز کیا ہے تاکہ مملکت میں عمرہ ویزے پرموجود سوڈانیوں کی مکینوں اورشہریوں کومیزبانی کرنے کی اجازت دی جاسکے۔

اس آن لائن سروس کے ذریعے مملکت میں عمرے کے لیے موجود سوڈانیوں کے ویزوں کوان کے رشتہ داریا دوستوں کے علاوہ سعودی شہری بھی سیاحتی ویزوں میں تبدیل کر سکتے ہیں۔

سعودی پریس ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق ویزا تبدیل کرنے کی تفصیل اور شرائط ابشرپلیٹ فارم پر دستیاب ہیں۔جو لوگ ویزا تبدیل کرنا چاہتے ہیں،انھیں پہلی بار ایسا کرنے پر مالی فیس سے استثنا حاصل ہو گا۔

ایس پی اے نے مزید کہا کہ یہ فیصلہ شاہ سلمان بن عبدالعزیزاورولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی ہدایات کی روشنی میں کیا گیا ہے۔

سوڈان میں فوج کے سربراہ جنرل عبدالفتاح البرہان اور ان کے سابق نائب محمد حمدان دقلوکے زیرکمان فورسز کے درمیان 15 اپریل سے لڑائی جاری ہے۔اس میں اب تک 750 سے زیادہ افراد ہلاک اور لاکھوں بے گھرہوچکے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے پناہ گزین کاکہنا ہے کہ تشددکے نتیجے میں لاکھوں افراد اپنے گھربار چھوڑنے پرمجبورہوگئے ہیں جبکہ سوڈان میں داخلی طور پربے گھرہونے والے افرادکی تعداد ایک ہفتے میں دُگناہوگئی ہے اور یہ سات لاکھ سے متجاوز ہوچکی ہے۔

اقوام متحدہ کے تخمینے کے مطابق سوڈان میں دربدر یا مفلوک الحال 50 لاکھ اضافی افراد کو ہنگامی امداد کی ضرورت ہوگی جبکہ آٹھ لاکھ 60 ہزارافراد کے ہمسایہ ممالک کی طرف جانے کی توقع ہے۔یہ ممالک پہلے ہی خود مالی بحران کا شکار ہیں جبکہ دنیا کے امیرممالک نے پناہ گزینوں کے لیے مالی امداد میں کٹوتی کردی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں