لوگوں کا سیلاب امریکی سرحدوں پر امڈ آیا، آرٹیکل 42 کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ میں داخل ہونے کے موقع سے فائدہ اٹھانے کے لیے گزشتہ چند گھنٹوں کے دوران ہزاروں لوگ جوق در جوق ’’میکسیکو-امریکی سرحد‘‘ پر پہنچ گئے۔ یہ اس وقت ہوا جب لوگوں کو معلوم ہوا کہ امریکہ کی جانب سے تارکین وطن کے حوالے سے پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

لوگوں کی سیلاب آرٹیکل 42 کی معیاد ختم ہونے کے ساتھ ہی امڈ آیا۔ آرٹیکل 42 کے تحت صحت کی بنا پر اقدام اٹھایا گیا تھا جس کے تحت کووڈ 19 کی وبا کے آغاز سے ہی سرحد پر امریکی علاقے میں داخل ہونے پر پابندی لگا دی گئی تھی۔

"آرٹیکل 42" کا مقصد کرونا کے پھیلاؤ کو محدود کرنا تھا۔ اس آرٹیکل کے تحت امریکی حکام کو ملک میں داخل ہونے والے تمام تارکین وطن بشمول سیاسی پناہ کے متلاشیوں کو فوری طور پر واپس کرنے کی اجازت مل گئی تھی۔ مارچ 2020 میں آرٹیکل کو نافذ کیا گیا تھا اور اس آرٹیکل کو تین سالوں میں 2.8 ملین بار استعمال کیا جا چکا ہے۔

اس قانونی اقدام کی تاریخ 1944 کی ہے جب اسے پبلک ہیلتھ قانون کے نام سے جانا جاتا تھا۔ یہ آرٹیکل حکام کو بیماریوں کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ہنگامی حالت نافذ کرنے کا اختیار فراہم کرتا ہے۔

مارچ 2020 میں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے کرونا وبا کے پھیلاؤ کو روکنے کے بہانے تارکین وطن کے بہاؤ کو روکنے کے لیے اس شق پر انحصار کیا تھا۔

اب نئی تبدیلی اور آرٹیکل 42 کی میعاد ختم ہونے سے سرحدوں پر تارکین وطن کی ایک بڑی تعداد جمع ہوگئی ہے اور "افراتفری" بڑھنے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔

اسی خدشہ نے بائیڈن حکومت کو سیاسی پناہ کے حق پر نئی پابندیاں عائد کرنے کی ترغیب دی اور ہزاروں سکیورٹی فورسز کو متحرک کرنے پر آمادہ کیا۔ حکومت نے متنبہ کیا کہ میکسیکو کے ساتھ سرحد ابھی کھلی نہیں ہے۔

ہوم لینڈ سیکیورٹی کے سکریٹری الیجینڈرو میئرکاس نے کہا کہ ہماری سرحدیں کھلی نہیں ہیں اور جو لوگ غیر قانونی طور پر اور بغیر کسی قانونی بنیاد کے امریکی سرزمین پر رہنے کے لیے ہماری سرحدیں عبور کریں گے انہیں نکال دیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم ان چیلنجوں کے بارے میں واضح ہیں جن کا ہمیں آنے والے دنوں اور ہفتوں میں سامنا ہو سکتا ہے۔ ہم اس صورت حال کا جواب دینے کے لیے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کئی علاقوں میں غیر ملکیوں کی ایک بڑی تعداد رجسٹرڈ ہے۔ بائیڈن نے حال ہی میں کہا تھا کہ معاملہ تھوڑی دیر تک افراتفری کا شکار ہوگا۔

اسی افراتفری کی تیاری میں وفاقی ریاست نے 4 ہزار فوجیوں سمیت سرحدوں پر 24 ہزار سے زیادہ فورسز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں کو متحرک کردیا ہے۔

واضح رہے ہر سال ہزاروں لوگ میکسیکو سے بہتر زندگی کا خواب سجائے امریکہ میں داخل ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔

صرف اس ہفتے کے آغاز سے ہی روزانہ 10 ہزار سے زیادہ افراد سرحد عبور کرکے امریکہ داخل ہو چکے ہیں۔ دسیوں ہزاروں افراد امریکہ میں داخل ہونے کے انتظار میں سرحد پر موجود ہیں ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں