روس اور یوکرین

یوکرین کاروس کے زیرقبضہ لوہانسک پربرطانیہ کے مہیّاکردہ کروزمیزائلوں سے حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یوکرین کے طیاروں نے روس کے زیر قبضہ شہر لوہانسک میں دوصنعتی مقامات کو برطانیہ کے مہیا کردہ اسٹارم شیڈو طویل فاصلے تک مار کرنے والے کروزمیزائلوں سے نشانہ بنایا ہے۔

برطانیہ نے جمعرات کو یوکرین کوطویل فاصلے تک مار کرنے والے کروز میزائل مہیا کرنے کی اطلاع دی تھی جس سے اسے روسی فوجیوں اوردوردراز اسلحہ کے ڈپوؤں کو نشانہ بنانے مدد ملے گی۔روس کی وزارت دفاع نے ہفتے کے روز ان برطانوی میزائلوں سے لوہانسک پرحملے کی اطلاع دی ہے۔

برطانوی وزیر دفاع بِن ویلیس نے کہا تھا کہ یہ میزائل یوکرین کی حدودمیں استعمال کیے جاسکتے ہیں، جس کا مطلب یہ ہے کہ انھیں کیف کی جانب سے یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ انھیں روس کی بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ سرحدوں کے اندر اہداف پر حملہ کرنےکے لیے استعمال نہیں کیا جائے گا۔

روسی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ ان میزائلوں نے جمعہ کولوہانسک میں پولیمربنانے والے پلانٹ اور گوشت کی پروسیسنگ کی ایک فیکٹری کو نشانہ بنایا تھا۔

وزارت کا کہنا ہے کہ برطانیہ کی جانب سے کیف حکومت کو مہیّاکردہ اسٹارم شیڈو فضا سے فضا میں نشانہ بنانے والے میزائلوں کو حملے کے لیے استعمال کیا گیا ہےجبکہ یہ اقدام لندن کے اس بیان کے برعکس ہے کہ ان ہتھیاروں کو شہری اہداف کے خلاف استعمال نہیں کیا جائے گا۔

بیان میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ روس نے یوکرین کے دو جنگی طیاروں ایس یو 24 اور مِگ 29 کو بھی مار گرایا ہے۔اپنے تازہ بلیٹن میں، وزارت دفاع نے یہ بھی کہا ہے کہ روسی افواج نے یوکرین کے مشرقی شہر بَخموت میں ایک اور بلاک پر کنٹرول حاصل کرلیا ہے۔اس پرروس گذشتہ 10 ماہ سے زیادہ عرصے سے قبضہ کرنے کی کوشش کررہا ہے۔

بیان کے مطابق فضائی افواج نے حملہ آور یونٹوں کو مدد مہیا کی اور دشمن کو پیچھے دھکیل دیا ہے۔روسی وزارت اکثر فوج کے شانہ بشانہ لڑنے والی نجی ملیشیا ویگنرکو ظاہرکرنے کے لیے "حملہ آوریونٹس" کی اصطلاح استعمال کرتی ہے ، جو بڑے جانی نقصان کی قیمت پر بَخموت پرروسی حملے کی قیادت کررہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں