ایران میں گیس کی اہم تنصیب پرمزدوروں کی ہڑتال پر آٹھ افراد گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران میں حکام نے ملک کے جنوب میں گیس کے ایک اہم مقام پرمزدوروں کی ہڑتال کی قیادت کے الزام میں آٹھ افرادکوگرفتار کرلیا ہے۔

نیم سرکاری خبررساں ادارے تسنیم نے مقامی نائب گورنراکبرپورَت کے حوالے سے بتایا کہ جنوبی پارس منصوبے میں مزدوروں کی ہڑتال کے آٹھ اہم رہنماؤں کوانٹیلی جنس سروسزنے گرفتارکر لیا ہے۔

جنوبی پارس/ نارتھ ڈوم میگا فیلڈ میں قریباً 40 ہزار افراد کام کرتے ہیں۔یہ دنیا میں گیس کا سب سے بڑا معلوم ذخیرہ ہے، جسے ایران قطرکے ساتھ شیئر کرتا ہے۔

پورَت نےمزید کہا:’’اس علاقے میں سرگرم آٹھ کمپنیوں اور ذیلی ٹھیکےداروں کوہڑتال پراکسانے کے الزام میں بلیک لسٹ کیا گیا ہے‘‘۔مئی کے اوائل میں مقامی میڈیانے اسی علاقے میں ہڑتال کی کال کی حمایت میں ملوّث بیرونی ٹھیکےداروں کی گرفتاری کی اطلاع دی تھی۔

حکام نےاپریل کے آخرمیں اعلان کیا تھا کہ انھوں نے 4000 مزدوروں کو تبدیل کرنا شروع کردیا ہے۔ وہ بہتراُجرت اور کام کےحالات بہتر بنانے کے مطالب کے حق میں ہڑتال کر رہے تھے۔

تاہم مزدوروں کی حامی خبر رساں ایجنسی ایلنانے خبردی ہے کہ جنوبی پارس میں ہڑتال کرنے والوں نے یونین کے مطالبات پراصرار جاری رکھا ہوا ہے۔ان کے اہم مطالبات میں اجرتوں میں 79 فی صد اضافے کے علاوہ امتیازی سلوک کا خاتمہ اور انجمن سازی کی آزادی کی اجازت دینا شامل ہے۔

سنہ 2022 میں ایران میں اساتذہ اور سرکاری بس ڈرائیوروں نے متعدد مرتبہ ہڑتال کی تھی اور اپنی تن خواہوں میں اضافے کا مطالبہ کیا تھا۔انھوں نے کم تن خواہوں اورزندگی گزارنے کی زیادہ لاگت کی مذمت کی تھی۔

ایران کی معیشت طویل عرصے سے امریکا کی قیادت میں مغرب کی مختلف پابندیوں کی زد میں ہے، حال ہی میں افراطِ زر کی بلند شرح اوراس کی قومی کرنسی کی قدرمیں ریکارڈ کمی کی وجہ سے شہریوں کے مالی حالات بری طرح متاثرہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں