سعودی عرب:اپریل میں افراطِ زرکی شرح 2.7 فی صد پربرقرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں اپریل میں سالانہ افراطِ زرکی شرح 2.7 فی صد رہی ہے اور اس میں گذشتہ ماہ کے مقابلے میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

جنرل اتھارٹی برائے شماریات کے سوموار کوفراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق ہاؤسنگ، پانی، بجلی، گیس اوردیگر ایندھن کی قیمتوں میں ایک سال قبل کے مقابلے میں 8.1 فی صد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ خوراک اور مشروبات کی قیمتوں میں 1.0 فی صد اضافہ ہوا ہے۔

اپریل 2023 میں مکانات کے مجموعی کرایوں میں 9.6 فی صد اضافہ ہوا۔ مارچ میں اسی طرح کے اضافے کے بعد اپارٹمنٹ کے کرایوں میں 22.2 فی صد اضافہ ہوا تھا۔

خوراک کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ دودھ، دودھ کی مصنوعات اور انڈوں کی قیمتوں میں قریباً11 فی صد اضافہ ہوا۔اعدادوشمار کے مطابق مارچ کے مقابلے میں اپریل میں اشیائے صرف کی قیمتوں میں 0.4 فی صد اضافہ ہوا۔

خبررساں ادارے رائٹرز کے ایک جائزے کے مطابق خلیجی ممالک میں افراطِ زر کی شرح بہت سی بڑی معیشتوں کے مقابلے میں کم ہے۔

رپورٹ میں پیشین گوئی کی گئی ہے کہ پورے سال کے لیے خطے میں افراطِ زرکی شرح 2.1 فی صد سے 3.3 فی صد کے درمیان رہے گی اور 2024ءمیں اس میں مزیدکمی آئے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں