مرکزی بینک کے گورنر کے بعد سوڈان کے قائم مقام وزیر داخلہ برطرف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سوڈان کی خود مختار کونسل کے سربراہ، لیفٹیننٹ جنرل عبدالفتاح البرہان نے نئے فرمان کے تحت متعدد اہم عہدیداروں کو ان کے عہدوں سے ہٹا دیا ہے۔ جنرل البرھان کے حکم پر مرکزی بنک کے گورنر، وزیر داخلہ اور پولیس چیف کو ان کے عہدوں سے ہٹا دیا ہے۔

جنرل البرھان نے عنان حامد محمد عمر کو پولیس فورسز کے ڈائریکٹر جنرل کے عہدے سے ہٹا کر لیفٹیننٹ جنرل خالد حسان محی الدین کو پولیس فورسز کا ڈی جی تعینات کیا ہے۔

البرہان نے سفیر عبدالمنعم عثمان محمد احمد البیتی اور سفیر حیدر بدوی صادق کو وزارت خارجہ سے برطرف کردیا ہے۔

انہوں نے وزارت خارجہ اور متعلقہ حکام کو اس فیصلے کو عملی جامہ پہنانے کی ہدایت کی۔

کل کو اتوارسوڈان کی عبوری خودمختاری کونسل کے سربراہ عبدالفتاح البرہان نے ایک فیصلہ جاری کرتے ہوئے حسین یحییٰ جنقول کو سوڈان کے مرکزی بینک کے گورنر کے عہدے سے ہٹا دیا تھا اور ان کی جگہ برعی الصدیق علی احمد کو مرکزی بنک کا نیا گورنر مقرر کیا ہے۔

البرہان نے وزارت خزانہ اور اقتصادی منصوبہ بندی اور بینک آف سوڈان کو اس فیصلے پر عمل درآمد کی ہدایت کی۔

قبل ازیں عبوری خود مختاری کونسل کے سربراہ نے سوڈان کے تمام بینکوں اور بیرون ملک ان کی شاخوں میں سریع الحرکت فورسز اور اس کی کمپنیوں کے اکاؤنٹس منجمد کرنے کا فیصلہ جاری کیا۔

عبوری خودمختاری کونسل کے اپنے آفیشل فیس بک اکاؤنٹ پر بیان میں کہا گیا ہےعبوری خودمختاری کونسل کے چیئرمین اور مسلح افواج کے کمانڈر انچیف لیفٹیننٹ جنرل عبدالفتاح البرہان نے باغی سریع الحرکت فورسز کے تمام اثاثے منجمد کرنے کا حکم دیا تھ

مقبول خبریں اہم خبریں