دوسرے مرحلہ میں اس سے بڑے فرق سے جیت کر ابھریں گے: ایردوان

صدر رجب طیب ایردوان کو 49.51 فیصد اور کلیچ دار اوغلو کو 44.88 فیصد ووٹ ملے: الیکشن اتھارٹی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ترکیہ کے صدر رجب طیب ایردوان نے پیر کے روز ترک الیکشنز اتھارٹی کی جانب سے رن آف مرحلہ کے اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اتوار کے انتخابات میں کوئی فاتح نہیں ہے اور ہم نے 28 مئی کو رن آف میں جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ہم رن آف میں ایک اور بڑے مارجن سے واپس آئیں گے۔

ایردوان نے مزید کہا کہ میں نے آج سے ہی رن آف کے لیے کام کرنا شروع کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا اب ہم پہلے راؤنڈ میں حاصل کیے گئے ووٹوں کو دوگنا کر دیں گے اور ایک تاریخی فتح حاصل کریں گے۔

ترک الیکشن اتھارٹی نے پیر کو باضابطہ طور پر اعلان کیا تھا کہ 14 مئی اتوار کے انتخابات میں کوئی فاتح نہیں ہے اور 28 مئی کو رن آف کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ترک الیکشن اتھارٹی نے کہا کہ صدر رجب طیب ایردوان کو 49.51 فیصد اور کمال کلیچ دار اوغلو کو 44.88 فیصد ووٹ ملے ہیں۔ اتھارٹی نے کہا کہ 100 فیصد ووٹوں کی گنتی مکمل ہوگئی ہے اور اس الیکشن میں ٹرن آؤٹ 88.92 فیصد رہا۔

21
21

عثمانی دور کے بعد کے ترکیہ کے اہم ترین انتخابات کے مکمل نتائج نے ظاہر کیا کہ ایردوان جنہوں نے 2003 سے اقتدار پر اپنی گرفت مضبوط کر رکھی ہے اور 10 سے زیادہ مرتبہ قومی انتخابات میں ناقابل شکست رہے ہیں اس مرتبہ 50 جمع ایک فیصد ووٹ حاصل کرنے میں معمولی سے فرق کے ساتھ ناکام ہوگئے۔

ترکیہ میں صدارتی انتخابات جیتنے کے لیے اہم امیدواروں میں سے ایک کو 50 فیصد سے زیادہ ووٹ حاصل کرنا ضروری ہے۔

ترک صدارتی انتخابات میں حزب اختلاف کے امیدوار کمال کلیچ دار اوغلو نے کہا کہ وہ انتخابات میں حصہ لینے کے عوام کے فیصلے کو قبول کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صدر ایردوان اس الیکشن میں وہ نتائج حاصل نہیں کر سکے جو وہ چاہتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ رن آف میں ہم ایردوان کو شکست دے کر فتح حاصل کرلیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں