اردن نےالاخوان المسلمون سے تعلق رکھنے والے ’دہشت گرد‘کو یواے ای کے حوالے کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن نے الاخوان المسلمون سے تعلق رکھنے والے ایک مطلوب شخص خلف عبدالرحمٰن حمیدالرمیثی کو متحدہ عرب امارات کے حوالے کردیا ہے۔

متحدہ عرب امارات کی سرکاری خبر رساں ایجنسی 'وام' نے بدھ کے روز خبر دی ہے کہ اماراتی حکام نے اردن سے الرمیثی کو اپنی تحویل میں لے لیا ہے۔

خلف الرمیثی کومتحدہ عرب امارات میں دہشت گرد قرار دی گئی الاخوان المسلمون سے وابستہ ایک خفیہ تنظیم قائم کرنے کے الزام میں مقدمے کا سامنا ہے۔اس تنظیم کا مقصد اماراتی حکومت کے بنیادی اصولوں کی مخالفت کرناتھا۔

ان کے خلاف مبیّنہ طور پروارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے تھے اور یہ گرفتاری عرب وزرائے داخلہ کی کونسل کے قانونی اورعدالتی تعاون کے طریق کارکے تحت عمل میں لائی گئی تھی۔ اس کے تحت مقامی قانونی کارروائیوں میں شرکت سے اجتناب کرنے والے مجرموں کے خلاف مشترکہ قانونی چارہ جوئی کی جاسکتی ہے۔

متحدہ عرب امارات کے فوجداری قانون کے مطابق، الرمیثی کے خلاف اسی الزام میں دوبارہ مقدمہ چلایا جائے گا۔واضح رہے کہ 2013ء میں ایک عدالتی فیصلے میں انھیں ان کی غیرموجودگی میں 15 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔اس وقت کی اطلاعات کے مطابق خلف الرمیثی اُن قریباً100 اماراتی شہریوں میں شامل تھے جن پربغاوت کے الزامات عاید کیے گئے تھے اور وہ حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش کررہے تھے۔

وام کی تازہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ متحدہ عرب امارات اپنی خودمختاری،استحکام اوراپنے شہریوں اور مکینوں کے تحفظ اورسلامتی کوبرقرار رکھنے کا اعادہ کرتا ہے اوریہ کہ وہ انصاف کے لیے مطلوب افراد کے خلاف کارروائی کرنے اور منصفانہ عدالتی عمل میں ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی عمل میں لانے میں کسی ہچکچاہٹ کا مظاہرہ نہیں کرے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں