انتخابات میں جو بھی جیتے ہم ترکیہ کے ساتھ کام جاری رکھیں گے:امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

رواں ماہ کے آخر میں ترکیہ میں ہونے والے صدارتی انتخابات کے دوسرے مرحلے کے انتظار کے ساتھ وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے کہا ہے کہ رن آف الیکشن میں جو جماعت بھی جیتے ہم ترکیہ کے ساتھ کام جاری رکھیں گے۔

خبر رساں ادارے رائیٹرز کے مطابق سلیوان نے بدھ کو ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ امریکا ترکیہ میں ایک مضبوط جمہوریت کا تسلسل دیکھنا چاہتا ہے۔

دوسرا راؤنڈ 28 مئی کو

قابل ذکر ہے کہ ترکیہ میں اتوار کے روز ہونے والے صدارتی اور پارلیمانی انتخابات برسر اقتدار صدر رجب طیب ایردوآن اور ان کی جماعت کو معمولی برتری حاصل رہی مگر وہ کامیابی کے لیے درکار پچاس فی صد ووٹ حاصل نہیں کرسکی۔ نیشن الائنس کے امیدوار، ریپبلکن پیپلز پارٹی کے رہ نما کمال کلیچدار اوغلو نے49.4 فی صد اور عوامی اتحاد کے امیدوار "اتا" سنان اوگان نے صدارتی انتخابات میں 44.96 فی صد ووٹ حاصل کیے۔

پیر کو سپریم الیکشن کمیشن کے سربراہ احمد ینار نے باضابطہ طور پر اعلان کیا کہ صدارتی انتخابات کا دوسرا دور 28 مئی کو ہوگا کیونکہ کسی بھی امیدوار کو 50 فیصد سے زیادہ ووٹ نہیں ملے۔

تاہم یورپ میں سلامتی اور تعاون کی تنظیم کے مبصرین کا خیال تھا کہ الیکشن کمیشن نے یہ ظاہر کیا کہ اسے انتخابات کے انتظام میں شفافیت حاصل نہیں ہے، خاص طور پر انتخابات کی جانبدارانہ حکومتی میڈیا کوریج بہت زیادہ دکھائی دیتی ہے جو کہ تشویشناک بات تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں