ایردوآن کا محافظ کا پیش کردہ پانی پینے سے انکار ، بیٹے کے ہاتھ سے پی لیا، ویڈیو وائرل

"استنبول" اخبار نے اس ویڈیو ، جس نے کئی سوالات اٹھائے ہیں، کے بارے میں کہا کہ اس کا تعلق "سیکیورٹی اقدام" سے ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترک صدر رجب طیب ایردوآن کی اپنے محافظ کی طرف سے پیش کردہ پانی پینے سے انکار کی ویڈیو نے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر بڑا تنازعہ کھڑا کر دیا۔

اس ویڈیو میں، جو اس وقت سماجی ذرائع ابلاغ پر بہت زیادہ گردش کر رہی ہے ،ایردوآن کا محافظ بار بار انہیں پانی کا گلاس دینے کی کوشش کرتا نظر آتا ہے، جب کہ ترک صدر اس سے لاتعلق نظر آتے ہیں، ایردوان نے اپنے محافظ سے پانی پینے سے انکار کر دیا اور اسے واپس کر دیا اور پھر اپنے بیٹے بلال ایردوآن کے ہاتھ سے لے لیا۔

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جب ترک صدر نے پانی کا گلاس دیکھا تو انہوں نے پہلے مڑ کر دیکھا، پھر اس یقین کے بعد پیا کہ ان کا بیٹا ہی اسے پیش کرنے والا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل اس ویڈیو کلپ نے ترک صدر رجب طیب اردگان کے رویے پر بہت سے سوالات اٹھائے ہیں۔

س بارے میں "استنبول" اخبار کی ویب سائٹ نے کہا کہ یہ معاملہ "سیکیورٹی اقدام" سے متعلق ہے۔

جبکہ اور کچھ صارفین نے اشارہ کیا کہ یہ ان کے ساتھ کچھ غلط ہونے کے خوف سے تھا۔

یہ ویڈیو ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب ایردوآن اور ان کے حریف، کمال قلیچدار اوغلو 28 مئی کو ہونے والے صدارتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں حصہ لے رہے ہیں، اور انتخابات جیتنے کے لیے امیدوار کو ووٹوں کی سادہ اکثریت درکار ہے۔

ترک صدر ایردوآن نے صدارتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں 49.52% ووٹ حاصل کیے اور ان کے مدمقابل سات اپوزیشن جماعتوں کے مشترکہ امیدوار قلیچ دار اوغلو نے 44.88% ووٹ حاصل کیے جب کہ ایردوان نے 5.28% ووٹروں کی حمایت کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں