شہزادہ ہیری کی برطانیہ میں پولیس تحفظ کی فراہمی کی درخواست مسترد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لندن کے ایک جج نے منگل کے روز شہزادہ ہیری کے وکلاء کی جانب سے برطانوی حکومت کے اس فیصلے کے خلاف کی گئی اپیل کو مسترد کر دیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ شہزادہ ہیری کو برطانیہ کے دورے کے دوران پولیس تحفظ فراہم کرنے کی اجازت نہ دی جائے چاہےوہ اپنی جیب سے ہی اس کا خرچہ کیوں نہ کریں۔

ہائی کورٹ کے جج نے کہا کہ برطانوی حکومت نے اپنے اختیارات سے تجاوز نہیں کیا جب اس نے برطانیہ میں رہتے ہوئے انہیں تحفظ فراہم کرنے سے انکار کیا۔

برطانوی حکومت نے شہزادہ ہیری اور ان کی اہلیہ میگھن کے 2020 میں شاہی فرائض چھوڑنے اور کیلیفورنیا منتقل ہونے کے بعد انہیں پولیس تحفظ فراہم کرنا بند کر دیا تھا۔ "

ہیری نے کہا کہ وہ اپنے چھوٹے بچوں کے ساتھ برطانیہ کا دورہ کرتے ہوئے خود کو محفوظ محسوس نہیں کرتے۔

یہ معاملہ پچھلے ہفتے اٹھایا گیا تھا جس دن ہیری اور میگھن نے نیویارک کے ایک پولیس اسٹیشن میں پاپرازیوں سے بچنے کی کوشش کی تھی، جب ایک ترجمان نے کہا تھا کہ وہ ایک تقریب میں شرکت کے بعد فوٹوگرافروں کے "تباہ کن کار کے تعاقب" میں پھنس گئے تھے۔

ہیری نےحکومت کی طرف سے تحفظ فراہم کرنے سے انکار کے فیصلے کے خلاف اپیل کی۔ ان کی اس اپیل کا ہتک عزت یا فون ہیکنگ کے الزامات پر برطانوی ٹیبلوئڈ پبلشرز کے خلاف لندن کی عدالتوں میں پانچ میں سے صرف ایک مقدمہ ہی نہیں سنا جا رہا ہے۔

ہیری اگلے ماہ ڈیلی مرر کے پبلشر کے خلاف مقدمے میں گواہی دینے والا ہے کہ اخبار نے 1990 کی دہائی سے ڈیوک کے بارے میں درجنوں مضامین کے لیے مواد اکٹھا کرنے کے لیے غیر قانونی طریقے استعمال کیے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں