سوڈانی محکمہ دفاع کا ریٹائرڈ اہلکاروں کو اپنی حفاظت کے لیے مسلح کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سوڈان میں محتاط پرسکون اور جھڑپوں میں کمی کے جلو میں سوڈانی وزارت دفاع نے ریٹائر ہونے وال سابق فوجی اہلکاروں سے مطالبہ کیا کہ وہ خود کو مسلح کرنے کے لیے قریبی فوجی کمانڈ کے پاس جائیں۔

وزارت دفاع نے جمعہ کو ایک بیان میں تصدیق کی کہ ریٹائر ہونے والوں کو مسلح کرنے کا مقصد خود کو اور اپنے خاندانوں کو محفوظ بنانا ہے۔

سول وار کی کوئی حد نہیں ہوتی

وزارت دفاع نے کہا کہ سول وار کی کی کوئی حد نہیں ہوتی۔ باغی گروپ شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرتا ہے۔ وزارت دفاع نے منحرف سریع الحرکت فورسز[ RSF ] پر اقوام متحدہ کے ہیڈکوارٹر کو لوٹنے اور عرب اور غیر ملکی سفارت خانوں پر حملے کرنے کا الزام لگایا۔

سوڈانی فوج کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف امریکا نے خرطوم میں جنگ بندی میں بہتری کے امکانات کا دعویٰ کیا ہے۔ امریکا کا کہنا ہے کہ سوڈان کے متحارب فریقین کی طرف سے جنگ بندی کے احترام کے شواہد ملے ہیں۔ خاص طور پر خرطوم میں لڑائی کی شدت میں کمی آئی ہے۔

گذشتہ دنوں سعودی عرب کے شہر جدہ میں مملکت اور امریکا کی ثالثی میں ہونے والے مذاکرات میں سوڈان کی مسلح افواج اور منحرف سریع الحرکت فورسز نے ایک ہفتے کی جنگ بندی پر اتفاق کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں