دوران پرواز طیارے کا دروازہ کھولنے والے نے وجہ کیا بتائی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جنوبی کوریا کے شہر ڈائیگو کے ایئرپورٹ پر جلد اترنے کے لیے دوران پرواز طیارے کا دروازہ کھول کر مسافروں کو دہشت زدہ کرنے والے نے اپنی جلد بازی کی وجہ بھی بیان کردی ہے۔ طیارے کے دروازے کے کھلے ہونے کا منظر دنیا بھر کی تمام سکرینوں کا موضوع بن گیا ہے۔ اس ویڈیو نے مجموعی طور پر تمام مواصلاتی پلیٹ فارمز پر زبردست رد عمل پیدا کیا ہے اور جنگل کی آگ کی طرح پوری دنیا میں پھیل گئی ہے۔

دنیا نے شاذ و نادر ہی ایسی صورتحال کا مشاہدہ کیا تھا اور شاذ و نادر ہی کسی نے ایسے مسافر کی ویڈیو بنائی تھی جس نے طیارے سے اترنے کی جلدی میں فضا میں ہی طیارے کا دروازہ کھول کر دیگر مسافروں کو دہشت زدہ کردیا تھا۔

اس ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ مسافر چیخ و پکار کر رہے تھے اور چیزیں اڑ رہی تھیں۔ جس خوفزدہ مسافر کو گرفتار کیا گیا اس نے کل جمعہ کو ایشیانا ایئرلائنر کے جنوبی کوریا کے شہر ڈائیگو میں لینڈنگ کے بعد اس وجہ کا اعتراف کیا جس نے اسے زمین سے تقریباً 213 میٹر کی بلندی پر یہ پاگل حرکت کرنے پر اکسایا تھا۔

چالیس سال کے اس شخص نے پولیس کو بتایا کہ اس نے دروازہ اس لیے کھولا کیونکہ اسے سانس کی تکلیف اور دم گھٹ رہا تھا اور وہ جلدی سے نیچے اترنا چاہتا تھا۔ اس نے یہ بھی واضح کیا کہ وہ ایک مشکل دور سے گزر رہا ہے اور ملازمت سے محروم ہونے کے باعث تناؤ کا شکار ہے۔ اس کے علاوہ اس نے دعویٰ کیا ہے کہ پرواز میں زیادہ وقت لگ رہا تھا اور پائلٹ گاڑی آہستہ چلا رہا تھا۔

ڈائیگو فائر ڈپارٹمنٹ کے ایک اہلکار نے تصدیق کی کہ کوئی زخمی نہیں ہوا لیکن نو افراد جو تمام نوعمرتھے کو سانس لینے میں تکلیف کے بعد ہسپتال لے جایا گیا۔

خیال رہے جہاز کے دروازے کھولنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ پرواز اڑتے ہی کیبن میں شدید دباؤ کی وجہ سے کسی کو اسے کھولنے کی اجازت نہیں ہوتی۔ چونکہ کیبن کے دروازوں کی شکل ٹیپرڈ ہوتی ہے جو انہیں روکنے والے کی طرح صرف دبانے سے بند کر دیتی ہے۔

ایسے کئی واقعات پیش آئے ہیں جن میں مسافروں نے دوران پرواز دروازے کھولنے کی کوشش کی لیکن وہ کبھی کامیاب نہیں ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں