مصر میں ممی بنانے والی دو سب سے بڑی ورکشاپیں دریافت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مصر کے وزیر سیاحت و نوادرات احمد عیسیٰ نے گیزہ میں سقرہ کے قدیم علاقے میں ایک نئی دریافت کا اعلان کردیا۔ نوادرات کی سپریم کونسل کے سیکرٹری جنرل مصطفیٰ وزیری نے اعلان کیا کہ وہ جس ٹیم کے سربراہ ہیں اس نے گزشتہ اگست میں اس جگہ پر اینٹوں کی دیوار کے نیچے ایک کنواں پایا تھا۔ اس مقام پر بڑی تعداد میں موجود تابوتوں اور ممیوں کی تعداد اس بات کا باعث بنتی ہے کہ وہاں ایک "ممیفیکیشن ورکشاپ" موجود رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس سمت میں کام یکم ستمبر کو شروع ہوا اور اس کے نتیجے میں دو بڑی ممیفیکیشن ورکشاپس کی دریافت ہوئی۔ ان میں سے ایک انسانی ممی بنانے والی اور دوسری جانوروں کی ممی بنانے والی ورکشاپ ہے۔ یہاں ایک اور انسانی ایمبلنگ ورکشاپ بھی ملی ہے۔ ہمیں تختہ ملا۔ ہمیں ایمبلنگ کے اوزار ملے۔ ہمیں ممی بنانے کا مواد بھی ملا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کھدائی کے دوران ٹیم کو ایک ایسے شخص کا مقبرہ ملا جو پرانی مملکت میں پانچویں خاندان کے دور میں بڑے عہدوں پر فائز تھا۔ یہ مقبرہ تقریباً 4400 سال پرانا ہے۔

مصر میں ممی بنانے والی ورکشاپس

شاندار قبرستان

مصطفی وزیری نے بتایا کہ کھدائی کے دوران ہمیں جدید ریاست میں 18ویں خاندان کا ایک قبرستان بھی ملا ہے۔ مقبرے کے نوشتہ جات اور رنگ انتہائی شاندار ہیں۔

واضح رہے مصر نے سیاحت کو بحال کرنے کے لیے اپنی آثار قدیمہ کی دولت سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کی ہے۔ یہ آثار قدیمہ مصر کے لیے زر مبادلہ کا اہم ترین ذریعہ شمار ہوتے ہی۔ نئے آثار قدیمہ کی جگہ پر کھدائی اپریل 2018 میں شروع ہوئی تھی۔ یہاں کھدائی کے آغاز کے چھ ماہ بعد وہتی کا مقبرہ دریافت ہوا تھا۔ اس مقبرے کو وزیری نے پرانی سلطنت کے پانچویں خاندان کے سب سے خوبصورت مقبروں میں سے ایک قرار دیا ہے۔

65 مجسمے

مصطفی وزیری نے اشارہ کیا کہ اس قبرستان میں 65 مجسمے ہیں اور ایسے نقوش اور رنگ ہیں جو دنیا کو حیران کر دینے والے ہیں۔ مصر نے گزشتہ برس مئی میں اس مقام کے ایک اور حصے میں کانسی کے مجسموں کا سب سے بڑا ذخیرہ دریافت کرنے کا اعلان کیا تھا اور بتایا تھا کہ یہاں 159 کانسی کے مجسمے موجود ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں