ترک صدر ایردوآن کی کامیابی کے ساتھ ہی ترک لیرا کی قدر گر گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

صدر طیب ایردوآن کی جانب سے اتوار کو ملک کے صدارتی انتخابات میں کامیابی کے اعلان کے فورا بعد ترک لیرا ڈالر کے مقابلے میں تازہ ترین کم ترین سطح پر آگیا۔

نئے تجارتی ہفتے کے آغاز پر، ترک کرنسی ڈالر کے مقابلے میں 20.05 لیرا پر آگئی، جو کہ جمعہ کو 20.06 کی ریکارڈ کم سطح سے زیادہ دور نہیں ہے۔

ترک لیرا کی قدر میں سال کے آغاز سے 6 فیصد سے زیادہ کمی واقع ہوچکی ہے اور گزشتہ دہائی کے دوران اس کی قدر 90 فیصد سے زیادہ نیچے گری ہے۔ اس دوران ترکیہ کی معیشت ، مہنگائی اور کرنسی کے بحران کی لپیٹ میں ہے۔

2021 کے بحران کے بعد سے، حکام نے زرمبادلہ کی منڈیوں میں اپنی سرگرمیاں محدود کر دی ہیں۔

وولفنگو پیکولی، ایڈوائزری فرم ٹینیو کے شریک صدر نے خبر رساں ایجنسی رائٹرز کو لکھے ایک ای میل میں کہا کہ "اگر حتمی اعداد و شمار سے تصدیق ہو جاتی ہے تو، "ایردوآن کا مکمل روایتی اقتصادی نقطہ نظر کو اپنانے کا امکان نہیں ہے،"

"تاہم، مارچ 2024 کے بلدیاتی انتخابات سے پہلے وقت حاصل کرنے کے مقصد کے لیے موجودہ غیرروایتی نقطہ نظر میں کچھ ایڈجسٹمنٹ کو اپنایا جا سکتا ہے۔"

پیر کو تجارت میں کمی کی توقع ہے کیونکہ یورپ کے ساتھ ساتھ امریکا میں بھی تعطیلات کے باعث کئی بازار بند ہی۔

مقبول خبریں اہم خبریں