سخت حفاظتی اقدامات کے درمیان اسرائیلی صدر آذربائیجان روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی صدر اسحاق ہرزوگ آج منگل کی صبح آذربائیجان کے لیے روانہ ہوگئے۔ وہ پہلی مرتبہ آٰذر بائیجان جا رہے ہیں ۔ 2009 کے بعد یہ کسی بھی اسرائیلی صدر کا آذر بائیجان کا پہلا دورہ ہے۔

اسرائیلی چینل 7 نے بتایا کہ یہ دو روزہ دورہ ایران کی سرحدوں سے متصل آذربائیجان کے جغرافیائی محل وقوع کی وجہ سے بہت اہمیت کا حامل ہے۔ اس دورے پر خصوصی توجہ ایران اور اسرائیل کے درمیان جاری سکیورٹی کشیدگی کی روشنی میں دی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیلی جنرل سیکیورٹی سروس نے اس حوالے سے سخت حفاظی اقداما کیے۔

ہرزوگ اپنے دورے کے دوران آذربائیجان کے صدر الہام علییف سے ملاقات کریں گے۔ بین گوریون ایئرپورٹ پر روانگی سے قبل ہرزوگ نے کہا "تجارتی اور تاریخی تعلقات کے علاوہ ہمیں یاد رکھنا چاہیے کہ آذربائیجان ایران کا پڑوسی ہے۔ ایران خطے میں ایک غیر مستحکم عنصر کی نمائندگی کر رہا ہے کیونکہ وہ مسلسل اسرائیل کی ریاست کے خلاف اور خطے میں امن و سلامتی کے لیے علاقائی اتحاد کے خلاف اقدامات کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ میں اپنے دورے کے دوران اس مسئلے پر ضرور بات کروں گا ‘‘

دوسری جانب اسرائیلی میڈیا کے مطابق آذربائیجان نے اسرائیلی صدر کے دورے کو محفوظ بنانے کے لیے دارالحکومت باکو کے بیشتر علاقوں کو بند کر دیا ہے۔ اسرائیلی اخبار یدیعوت احرونوت نے کہا باکو ہزاروں فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کو تعینات کردیا گیا ہے۔ سیکورٹی سخت کرنے کا اقدام ایران کی جانب سے دورے میں خلل ڈالنے کی کوششوں کے خدشے کے پیش نظر کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں