ناروے کی مبینہ روسی وہیل جاسوس سویڈن کے ساحل کے قریب دوبارہ نمودار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایک سفید "بیلوگا" وہیل جسے روسی بحریہ نے اس کے جسم کے گرد آلات نصب کرکے جاسوسی کے لیے تربیت دی تھی سویڈن کے ساحل کے قریب دوبارہ نمودار ہوئی۔ اس سے قبل یہ وہیل ناروے کی جاسوسی کی مبینہ کوشش میں استعمال کی گئی تھی۔

ایک تنظیم جو Hvaldimir وہیل کی نقل و حرکت پر نظر رکھتی ہے اس کا نام ناروے نے "وہیل" سے تعبیر کیا ہے۔ روسی میں Hval کا مطلب ہے وہیل جہاں تک دیمیر کا تعلق ہے تو یہ روسی صدرکے نام کا حصہ ہے۔

"ھوالدمیر"مئی 2019 میں ناروے کے انتہائی شمال میں Finnmark کاؤنٹی کے پانیوں میں نمودار ہوئی تھی۔ مغربی میڈیا میں اس حوالے سے شائع ہونے والی تفصیلات "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کے مطالعے سے گذری ہیں۔ان تفصیلات کے مطابق ناروے کے پانیوں میں روس کے جاسوسی آلات کو لیے یہ وہیل تین سال رہی۔ وہیل کو ٹریک کرنے والی ون وہیل آرگنائزیشن کے ایک سمندری ماہر حیاتیات سیباسٹین اسٹرینڈ کے حوالے سےمعلوم ہوتا ہے کہ یہ وہیل سویڈن کے جنوب مغربی ساحل سے دور ہنیبوسٹرینڈ علاقے کے پانیوں میں گذشتہ اتوار کو نمودار ہوئی تھی۔

ڈاکٹر اسٹرینڈ نے مزید کہا کہ"ہم نہیں جانتے کہ اب وہ اپنے قدرتی ماحول سے بہت دور کیوں تیزی سے آگے بڑھ رہی ہے۔ ہو سکتا ہے کہ ہارمونز اسے اپنے ساتھی کی تلاش میں لے جا رہے ہوں، کیونکہ اس کی عمر 13 سے 14 سال کے درمیان ہے۔ یہ وہ عمر ہے جب اس کے ہارمونز بہت مضبوط ہوتے ہیں، یا اس وجہ سے کہ وہ خود کو تنہا محسوس کرتی ہے۔انہوں نے وضاحت کی کہ بیلوگا ایک بہت ہی سماجی قسم کی وہیل ہے اور ہو سکتا ہے کہ وہ اپنی نوعیت کی دوسری وہیلوں کی تلاش کر رہی ہو۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں