اسرائیل: موساد نے اٹلی میں کشتی حادثہ میں اپنے سابق ایجنٹ کی ہلاکت کی تصدیق کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیل کی انٹیلی جنس ایجنسی موساد نے اٹلی میں اختتام ہفتہ پر کشتی کے حادثے میں اپنے ایک ریٹائرڈ ایجنٹ کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق اٹلی کے شمال میں واقع قصبے لیسانزا میں ایک جھیل میں کرائے پر لی گئی ایک ہاؤس بوٹ میں سابق ایجنٹ سمیت 22 افراد تفریح کررہے تھے۔اس دوران میں اچانک طوفان آجانے کی وجہ سے ان کی کشتی الٹ گئی اور اس میں سوار چار افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ان میں موساد کا ایک ریٹائرڈ ایجنٹ بھی شامل تھا۔

اس حادثے میں دو اطالوی انٹیلی جنس ایجنٹ اور کشتی کے دورکنی عملہ میں شامل ایک روسی خاتون بھی ہلاک ہو گئی ہے۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر سے موساد کی جانب سے بدھ کو جاری کردہ ایک بیان کہا گیا ہے کہ نامعلوم ایجنٹ کی باقیات تدفین کے لیے اسرائیل واپس بھیج دی گئی ہیں۔

اس سے قبل وزارت خارجہ نے اس بات کی تصدیق کی تھی کہ اسرائیلی سکیورٹی فورسز سے ریٹائر ہونے والے ایک شخص کی ہلاکت ہوئی ہے لیکن اس نے اس کا نام یا عمر یا اس کے پیشہ ورانہ پس منظر کے بارے میں تفصیل فراہم نہیں کی تھی۔

اسرائیلی وزیر اعظم کے دفتر کا کہنا ہے کہ ایجنسی میں ایجنٹ کے کام کی وجہ سے مزید تفصیل ظاہر نہیں کی جا سکتی اوراس کے اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا گیا ہے۔

اطالوی پولیس نے منگل کے روز کہا تھا کہ اس کے پاس زندہ بچ جانے والے 19 دیگر افراد کی شناخت یا پیشوں کے بارے میں مزید معلومات نہیں ہیں۔ کچھ تیر کر ساحل تک پہنچنے میں کامیاب رہے تھے، جبکہ باقی افراد کو دیگر کشتیوں کے ذریعے نکال لیا گیا تھا۔

اطالوی ذرائع ابلاغ کے مطابق ایک نجی طیارے کے ذریعے زندہ بچ جانے والے دیگر اسرائیلیوں کو اٹلی سے باہر منتقل کردیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں