برطانیہ میں پولیس اور دو لڑکوں کے درمیان تصادم کی ویڈیو نے تنازع کھڑا کر دیا

غیر سماجی رویہ پر پولیس نے بس سے اترنے کا کہا تو دو افراد پولیس سے لڑ پڑے، دو اہلکار معمولی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ایک مختصر ویڈیو کلپ نے برطانیہ میں اس وقت تنازع کھڑا کردیا جب اس ویڈیو میں مشرقی لندن میں پانچ پولیس اہلکاروں کو دو نوجوانوں سے کشتی کرتے ہوئے دکھایا گیا۔ ان نوجوانوں نے حکم کو ماننے سے انکار کیا اور ہاتھوں سے سیکورٹی اہلکاروں کی مزاحمت شروع کردی۔ جس کے نتیجے میں دو اہلکار زخمی ہوگئبے اور انہیں علاج کے لیے ہسپتال لے جایا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے مشرقی لندن کے ایک بس سٹاپ کے قریب ایک راہگیر کی طرف سے فلمائے گئے ویڈیو کلپ کی کاپی حاصل کی جس میں پانچ پولیس اہلکار دو نوجوانوں کو قابو کرنے کی کوشش کرتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں۔ ان نوجوانوں نے بس چھوڑنے سے انکار کر دیا تھا۔

ویڈیو کلپ نے سوشل نیٹ ورکس پر تنازع کھڑا کر دیا۔ بہت سے لوگوں نے پولیس سے عوامی مقامات پر غیر قانونی کاموں میں ملوث فسادیوں کے خلاف مزید سختی کرنے کا مطالبہ کیا۔

ایک مقامی نیوز ویب سائٹ ’مائی لندن‘ کے مطابق یہ واقعہ گزشتہ بدھ 31 مئی کی رات ساڑھے دس بجے مشرقی لندن کے علاقے ’والتھمسٹو‘ میں پیش آیا۔ یہ دونوں دونوں سولہ سال کے تھے اور بس کے اندر غیر سماجی رویے میں ملوث ہوتے تھے۔ پولیس اہلکاروں نے انہیں بس چھوڑنے کا کہا تو انہوں نے حکم ماننے سے انکار کردیا تھا۔

دو 16 سالہ لڑکوں کو حملہ کے شبہ میں گرفتار کیا گیا اور ایک 54 سالہ خاتون کو نشے میں دھت اور مشتعل ہونے کے شبہ میں گرفتار کیا گیا اور تینوں ابھی تک زیر حراست ہیں۔

یوکے پولیس کے ترجمان سائمن کریک نے کہا ہے کہ ایک بار پھرہم نے دیکھا ہے کہ افسران پر عوام کے ایک رکن کی مدد کے لیے کال کا جواب دیتے ہوئے حملہ کیا گیا، یہ ناقابل قبول رویہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں