سعودی عرب اور چین کی ’ویژن 2030‘ اور ’بیلٹ اینڈ روڈ‘ میں پاور سیکٹر کے کردار پر گفتگو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب اور چین کے توانائی کے حکام نے مملکت کے ویژن 2030 کے منصوبوں اور بیجنگ کے بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو کے حصول میں پاور سیکٹر کے کردار پر تبادلہ خیال کیا۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق سعودی وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے اپنے چینی ہم منصب ژانگ جیانہوا سے ملاقات کی اور دونوں جانب سے اپنی معیشتوں کو متنوع بنانے کی کوششوں پر تبادلہ خیال کیا۔ اجلاس میں دونوں فریقوں کے درمیان تعاون کے شعبوں پر تبادلہ خیال کیا گیا اور توانائی کی فراہمی کی حفاظت کو یقینی بنانے کی اہمیت پر زور دیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق دونوں فریقوں نے خام سے کیمیائی (سی ٹو سی) منصوبوں)، ہائیڈرو کاربن کے جدید استعمال اور جوہری توانائی کے پرامن استعمال میں ممکنہ تعاون پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ جوہری ایندھن، یورینیم کی تلاش اور کان کنی کے قومی منصوبے، بجلی، قابل تجدید توانائی، صاف ہائیڈروجن کے منصوبے، اور توانائی کی کارکردگی پر بھی بات چیت کی گئی۔

اجلاس میں مبینہ طور پر سرکلر کاربن اکانومی (CCE) کو اپنا کر آب و ہوا کے چیلنجوں سے نمٹنے کے ذرائع پر بھی غور کیا گیا۔ سرکلر کاربن اکانومی آب و ہوا کے چیلنجوں سے نمٹنے اور اخراج کو منظم کرنے کے لیے ایک فریم ورک ہے۔ خاص طور پر اس میں کاربن ہٹانے والی ٹیکنالوجیز کا استعمال کیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں