بستر مرگ پر ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کرنے والے مصری پروفیسر کی وفات پر ہر آنکھ اشکبار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرمیں علالت کے دوران بستر مرگ پر’پی ایچ ڈی‘ کی ڈگری حاصل کرنے والے شہری کی وفات کی خبر نے سب کو افسردہ کردیا۔

مصرکی الازہر یونیورسٹی کے بیمار پروفیسر نے ہفتے کی شام کو آخری سانس لی تھی۔

فوت ہونے والے مصری استاد محمود وھبہ کے خاندان نے بتایا کہ انہوں نے جامعہ الازھرکی فیکلٹی آف کامرس اسسٹنٹ پروفیسر کے طورپر خدمات انجام دیتے ہوئے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی تھی۔ انہوں نے شماریات میں پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی۔ انہیں جب یہ ڈگری جاری کی گئی تو وہ بستر علالت پر تھے اور عرب کنٹریکٹرہسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں زیر علاج تھے۔ وہ ایک انوکھی بیماری کا شکار تھے جو بہت کم لوگوں کو ہوتی ہے۔

فوت ہونے والے پی ایچ ڈٰی ڈاکٹر کے اہل خانہ نے مزید کہا کہ وہ ان کی میت کو آج اتوار کو بعد نماز عصر شمالی مصر میں ان کے آبائی شہر طنطا میں سپرد خاک کریں گے۔

محمود وہبہ، اسسٹنٹ لیکچرر برائے کامرس فیکلٹی، الازہر یونیورسٹی

دوسری طرف ڈاکٹر سلامہ داؤد کی سربراہی میں جامعہ الازہر نے ڈاکٹر محمود وہبہ کی وفات پر جامعہ الازھر کی طرف سے بھی افسوس کا اظہار کیا گیا۔ جامعہ الازھر اور متوفی کے رفقاء کی طرف ان کے تحصیل علم کے شوق اور ان کی استقامت کو سراہا۔

جامعہ الازہر الشریف کے سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب نے ہدایت کی تھی کہ مرحوم کے بیمار ہونے کے دوران ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد ان کے علاج کے اخراجات الازہر یونیورسٹی اسپانسر کرے۔

مصری محقق نے ڈاکٹریٹ کی ڈگری مصر کے ایک ہسپتال کے ایک کمرے کے اندر حاصل کی، جہاں سے اسے ایک نایاب بیماری میں مبتلا ہونے کے بعد علاج کے لیے منتقل کیا گیا۔ کالج اور یونیورسٹی کونسلز نے ہسپتال کے اندر ایک مباحثہ کمیٹی کے انعقاد پر اتفاق کیا جس میں محقق کا علاج کیا جا رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں