مصر اور اسرائیل کے درمیان "سرحدی جھڑپ" کے بعد سکیورٹی الرٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل اور مصر کے درمیان سرحد پر ’’ العوجہ‘‘ بارڈر کراسنگ پر فائرنگ کے واقعہ کے بعد سکیورٹی الرٹ دیکھا گیا ہے۔ کراسنگ پر مصری سکیورٹی اہلکار کی فائرنگ سے 3 اسرائیلی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔ مصر نے اس واقعہ کو سرحد کے پار منشیات کے سمگلروں کا پیچھا کرتے ہوئے پیش آنے والی فائرنگ سے جوڑ دیا تھا۔ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے مصری فریق کے ساتھ ملکر واقعہ کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاھو نے کہا ہے کہ اس واقعہ سے اسرائیل اور مصر کے درمیان مستقبل میں تعاون پر اثر نہیں پڑے گا۔ ہفتہ کے روز سرحد پر فائرنگ میں ایک مصری سرحدی محافظ بھی جاں بحق ہوگیا تھا۔

اسرائیلی ذرائع نے بتایا کہ ابتدائی طور پر معلوم ہوتا ہے کہ مصری پولیس اہلکار نے منشیات کی سمگلنگ کے واقعے سے فائدہ اٹھاتے ہوئے علاقے میں ایک ناکے سے گھس کر مرد اور خواتین فوجیوں کو گولی مار کر ہلاک کیا اور پھر اپنا حملہ جاری رکھا۔

اسرائیلی فوج نے شروع میں اعلان کیا تھا کہ اس نے فائرنگ کے تبادلہ میں ایک مسلح شخص کو ہلاک کر دیا ہے جو سرحد پار کرنے میں کامیاب ہو گیا تھا۔ اس کے بعد اسرائیلی میڈیا نے سمگلنگ کی کارروائیوں، فلسطینیوں کی جانب سے فوجیوں کو اغوا کرنے کی کوششوں پھر مصری درانداز کی جانب سے فائرنگ کی متعدد کہانیاں بیان کی تھیں۔

ان متضاد اطلاعات کے بعد اسرائیلی فوج نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ واقعہ کی تحقیقات کی جا رہی ہیں اور گھنٹوں بعد اس نے تمام تفصیلات کا اعلان کیا۔ یہ کارروائی ایک ایسے وقت میں ہوئی ہے جب اسرائیلی فوج کو کوئی پیشگی انتباہ نہیں تھا۔ اسرائیلی وزیر دفاع یوو گیلنٹ کی جانب سے جائزے کے بعد علاقے میں فوج کو چوکس رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں