تاریخ کے دس بڑے ٹرین حادثات میں دو بھارت میں رونما ہوئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
7 منٹس read

بھارت کے شہر اڑیسہ میں گذشتہ روز ٹرینوں کے آپس میں ٹکرانے کے بعد میں تلاش اور ریسکیو کی کارروائیاں مکمل ہو گئی ہیں۔ 20 سال کی مدت میں یہ واقعہ بھارت کا سب سے مہلک ٹرین حادثہ ہے جس میں تین ٹرینوں کے ٹکرانے سے 300 افراد ہلاک اور 900 سے زائد زخمی ہوئے۔

حادثے کی وجوہات کے بارے میں ہفتے کی شام تک کوئی ٹھوس بیان سامنے نہیں آیا تھا۔ اتوار کے روز بھارت کے وزیر ریلوے اشونی ویشنو نے نیو ٹیلی وژن نیٹ ورک دہلی کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ الیکٹرانک سگنلنگ سسٹم میں خرابی تھی جس کی وجہ سے ٹرین غلط طریقے سے پٹری تبدیل کر رہی تھی۔ یہ تکنیکی خرابی ٹرینوں کے تصادم کا سبب بنی۔‘‘ وزیر ریلوے نے مزید کہا، ’’یہ کس نے کیا اور اس کی کیا وجہ ہے یہ پتہ چل جائے گا۔‘‘

عینی شاہدین کی طرف سے بھارت میں گزشتہ دو دہائیوں کے اس سب سے مہلک ریل حادثے کے بارے میں مختلف بیانات سامنے آئے ہیں تاہم اس حادثے میں تین ٹرینوں کے تصادم کی تصدیق ہو گئی ہے۔ کورومنڈل ایکسپریس جومغربی بنگال کے شالیمار اسٹیشن سے جنوبی شہر چنئی جا رہی تھی، ہاوڑہ سُپر فاسٹ ایکسپریس جو بنگلور کے یشونت پور سے ہاوڑہ کی طرف رواں تھی اور ایک مال گاڑی جو باہانگا بازار اسٹیشن پر کھڑی تھی، ان تینوں کے تصادم کے نتیجے میں بھارت میں یہ خوفناک حادثہ پیش آیا۔

بھارت میں اموات کی تعداد کے لحاظ سے 11ویں نمبر آنے والا یہ حادثہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا جب وزیر اعظم نریندر مودی برطانوی نو آبادیاتی دور کے بھارتی ریل ٹریکس کو جدید بنانے پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہیں۔ ریلوے کے نظام کی بہتری کے لیے حکومتی کوششوں کے باوجود بھارت میں ہر سال کئی سو ٹرین رونما ہوتے ہیں۔ بھارتی ٹرین نیٹ ورک کسی ایک انتظامیہ کے زیر نگرانی کام کرنے والا دنیا کا سب سے بڑا نیٹ ورک ہے۔

گذشتہ برسوں میں دنیا نے کئی ایسے ریلوے حادثات دیکھے گئے جن میں غیر معمولی جانی اور مالی نقصان ہوا۔ ذیل میں ہم دنیا کے 10مہلک ترین ٹرین حادثات پر روشنی ڈالی جا رہی ہے۔

سری لنکا میں سمندر کی ملکہ البحر ٹرین حادثہ

"دی فیڈرل" ویب سائٹ کے مطابق سری لنکا میں "کوئین آف دی سی" ٹرین حادثہ دسمبر 2004 میں بحر ہند کے سونامی کی وجہ سے ہوا۔ یہ ریلوے کی تاریخ کا سب سے مہلک ٹرین حادثہ ہے جس میں 1,700 سے زیادہ جانیں گئیں۔

اوور لوڈ شدہ ٹرین تیلاوٹا کے قریب جنوب مغربی ساحلی ریلوے کے ساتھ دو لہروں کی زد میں آ کر تباہ ہو گئی جب یہ کولمبو سے جنوبی شہر گالے کی طرف جا رہی تھی۔

بھارت میں بہار ٹرین سانحہ

اس کے علاوہ جون 1981میں بھارت میں بہار ٹرین حادثہ سب سے المناک حادثات میں سے ایک تھا، جس میں تقریباً 800 افراد کی جانیں گئیں۔

یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب ٹرین جو مانسی شہر کے قریب دریائے باگمتی پر پل کراس کر رہی تھی کہ طوفان کی زد میں آ گئی۔

بھارت میں بہھار سے
بھارت میں بہھار سے

جس کے نتیجے میں ٹرین پٹری سے اتر کر دریا میں جا گری جس سے سینکڑوں افراد ہلاک ہو گئے۔

نو بوگیوں والی ٹرین مانسی اور سہارسا کے درمیان روٹ پر تقریباً 1000 مسافروں کو لے کر جا رہی تھی اور شبہ ہے کہ حادثے کے دوران ٹرین کی بریک فیل ہو گئی تھی۔

فرانس میں ٹرین پٹری سے اتر گئی

ادھر دسمبر سنہ1917ء میں فرانس میں سینٹ مشیل ڈی مورین ٹرین پٹری سے اتر گئی، جس میں 700 سے زائد افراد ہلاک ہوئے۔

اس حادثے کو فرانسیسی تاریخ کا سب سے مہلک ریلوے حادثہ سمجھا جاتا ہے۔

رومانیہ میں سیوریہ حادثہ

جنوری سنہ1917ء میں رومانیہ میں سیوریہ ریلوے حادثے میں 600 سے زیادہ افراد ہلاک ہوئے۔

یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب ٹرین جس میں 1000 افراد سوار تھے بریک فیل ہونے کی وجہ پٹری سے اتر گئی۔

بدقسمتی سے جیسے ہی ٹرین تیز رفتاری سے اسٹیشن کے قریب ایک کھڑی کنارے سے اتر رہی تھی پٹری سے اترنے کے نتیجے میں تباہ کن آگ لگ گئی۔

میکسیکو میں ٹرینیں
میکسیکو میں ٹرینیں

میکسیکو میں گواڈالا جارا ٹرین

جنوری سنہ1915ء میں میکسیکو میں گواڈالا جارا ٹرین حادثہ پیش آیا جس کے نتیجے میں 600 سے زائد جانوں کا المناک نقصان ہوا۔ یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب ٹرین ڈھلوان سے نیچے اتر رہی تھی تو بریک فیل ہو گئی۔

بریک فیل ہونے کے نتیجے میں ٹرین پٹری سے اتر گئی اور گواڈالا جارا کے قریب قریبی کھائی میں جا گری۔

اوفا پرشیا ٹرین حادثہ

روس میں اوفا ٹرین حادثہ جون سنہ1989ء میں اس وقت کے سوویت یونین کے شہر اوفا کے قریب پیش آیا جس میں 575 افراد ہلاک ہوئے۔یہ حادثہ روسی اور سوویت تاریخ کا سب سے مہلک ریلوے حادثہ ہے۔

اٹلی میں ٹرینیں
اٹلی میں ٹرینیں

اٹلی کے شہر بافانو میں ٹرین حادثہ

مارچ 1944 میں جنوبی اٹلی کے بالوانو کے قریب ایک المناک حادثہ پیش آیا جس میں 520 افراد ہلاک ہوئے۔

اسے ملکی تاریخ کا بدترین ٹرین حادثہ سمجھا جاتا ہے اور اسے صدی کے سب سے عجیب ریلوے حادثات میں سے ایک کے طور پر جانا جاتا ہے۔

یہ تباہی لوکوموٹیو نمبر 8017 کے بھاپ کے انجنوں سے خارج ہونے والی کاربن مونو آکسائیڈ گیس کی وجہ سے ہوئی جب یہ آرمی ٹنل کے اندر کھڑی ڈھلوان پر موجود گاڑیوں سے ٹکرا گئی۔

اس مقام پر استعمال ہونے والے کم کوالٹی کے کوئلے سے زہریلا کاربن مونو آکسائیڈ پیدا ہوا جس کی وجہ سے اموات ہوئیں۔

ہسپانیہ میں ٹورے ڈیل بیرزو ٹرین حادثہ

اسی تناظر میں ٹورے ڈیل بیرزو ٹرین حادثہ جنوری 1944 میں پیش آیا تھا جس میں 500 سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔یہ تباہی تین ٹرینوں، تین بوگیوں والی ایک چلتی موٹر ٹرین اور ایک سرنگ کے اندر کوئلے کی ٹرین کے ٹکرانے کی وجہ سے لگی آگ کی وجہ سے ہوئی۔

اسپین کا ریلوے نیٹ ورک
اسپین کا ریلوے نیٹ ورک

ایتھوپیا میں آوش ٹرین

آوش ٹرین حادثے میں تقریباً 400 افراد ہلاک ہوئے۔ اور یہ افریقہ کا اب تک کا بدترین ٹرین حادثہ ہے۔

یہ حادثہ جنوری سنہ 1985 میں ایتھوپیا کے قصبے آوش کے قریب ایک ایکسپریس ٹرین کے پٹری سے اترنے کی وجہ سے پیش آیا۔

مصر میں العیاط ٹرین حادثہ

آخر کار فروری 2002 میں قاہرہ سے 46 میل دور العیاط کے قریب ٹرین حادثہ پیش آیا جس میں 383 افراد ہلاک ہوئے۔

مصر میں ال آیات ٹرین حادثے سے
مصر میں ال آیات ٹرین حادثے سے

قاہرہ اور الاقصر کے درمیان سفر کرنے والی مسافر ٹرین کی 11 بوگیاں سواریوں سےبھری ہوئی تھیں جس کی وجہ سے پانچویں بوگی میں کھانا پکانے والا گیس سلنڈر پھٹ گیا جس سے آگ سات بوگیوں تک پھیل گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں