امریکہ اور سعودی عرب کا علاقائی استحکام کے لئے مل کر کام کرنے پر اتفاق

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور امریکی وزیر خارجہ نے ایک کھلی ملاقات میں واضح بات چیت کی جس میں علاقائی اور دوطرفہ مسائل کی مکمل رینج کا احاطہ کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن نے سعودی ولی عہد محمد بن سلمان سے دو طرفہ تعلقات اور تعاون پر بات چیت کی ہے جس کا مقصد دیرینہ اتحادی کے ساتھ تعلقات کو فروغ دینا ہے۔

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے اعلیٰ امریکی سفارت کار کی یہ ملاقات جدہ کے قصر السلام میں ہوئی منگل کو رات گئے ہوئی۔

مملکت کی سرکاری نیوز ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ کے مطابق دونوں رہنماؤں کے درمیان ہونے والی ایک کھلی ملاقات تھی جس میں علاقائی اور دوطرفہ مسائل کی مکمل رینج کا احاطہ کیا گیا۔

تقریباً ایک گھنٹہ 40 منٹ تک جاری رہنے والی اس ملاقات میں سوڈان سے امریکیوں کے انخلا کے لیے سعودی عرب کی حمایت، یمن میں سیاسی مذاکرات کی ضرورت اور اسرائیل کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے امکانات سمیت مختلف موضوعات پر بات ہوئی۔

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن منگل کی شام بحیرہ احمر کے شہر جدہ میں اترے اور توقع ہے کہ وہ خلیج تعاون کونسل کے اجلاس کے لیے بدھ کو ریاض جائیں گے۔

سعودی عرب کی جانب سے ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کے بعد بلینکن کا یہ پہلا دورہ ہے، جسے مغرب اس کی متنازعہ جوہری سرگرمیوں اور علاقائی تنازعات میں ملوث سمجھتا ہے۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اور دیگر سعودی حکام سے ملاقات کے علاوہ، امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلینکن ریاض میں اسلامک سٹیٹ مخالف اجلاس میں بھی شرکت کریں گے اور خلیج تعاون کونسل کے وزرائے خارجہ سے ملاقاتیں کریں گے۔ چھ ممالک پر مشتمل جی سی سی میں بحرین، کویت، عمان، قطر، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات شامل ہیں۔

سعودی عرب کی جانب سے ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کے بعد بلینکن کا یہ پہلا دورہ ہے، جسے مغرب اس کی متنازعہ جوہری سرگرمیوں اور علاقائی تنازعات میں ملوث سمجھتا ہے۔

سعودی عرب کی جانب سے ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے کے بعد بلینکن کا یہ پہلا دورہ ہے

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق امریکی وزیر خارجہ کی تیل کی دولت سے مالا مال ملک کے تین روزہ دورے کے دوران سوڈان اور یمن میں تنازعات کے خاتمے کی کوششوں، اسلامک سٹیٹ گروپ (داعش) کے خلاف مشترکہ جنگ اور اسرائیل کے ساتھ عرب دنیا کے تعلقات پر بھی گفتگو ہو گی۔

انٹونی بلینکن نے یہ دورہ مشرق وسطیٰ میں تیزی سے بنتے ہوئے اتحاد کے وقت کیا ہے، جس کا مرکز چین کی ثالثی میں مارچ میں علاقائی ہیوی ویٹ سعودی عرب اور ایران کے درمیان ہونے والی بات چیت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں