سعودی عرب کی خلیجی ممالک اور امریکہ کیساتھ ملکر فوجی مشقیں ’’ عزم النسر‘‘ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی مسلح افواج نے خلیج تعاون کونسل کے ملکوں اور امریکہ کی شراکت میں فوجی مشقیں ’’عزم النسر‘‘ شروع کردی ہیں۔ ان مشقوں میں سعودی افواج کی چاروں شاخیں یعنی زمینی، فضائی، بحری اور فضائی دفاع کی افواج شرکت کر رہی ہیں۔ ’’ عقاب کے عزم‘‘ کے عنوان سے یہ مشقیں سعودی عرب کے مختلف علاقوں میں جاری ہیں۔

"ایگلز ریزولوو 23 " کے اہم مراحل کے ایک حصے کے طور پر حصہ لینے والی افواج ظہران ایئر وارفیئر سینٹر میں کمانڈ سینٹر مشق کر رہی ہیں۔ ان مشقوں میں شرکا زمین پر رونما ہونے والے بہت سے مختلف مفروضوں اور منظرناموں سے نمٹنے کی تربیت حاصل کرتے ہیں۔

زمینی افواج اور ان کے امریکی ہم منصبوں نے شمالی علاقے میں کنگ خالد ملٹری سٹی کے میدانوں میں بڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں اور بڑے پیمانے پر جانی نقصان کی دوائیوں کے خلاف دفاعی مشق کی۔

بحری افواج اور ان کے امریکی ہم منصبوں نے خلیج عرب میں سپیڈ بوٹس، طوفان اور معائنہ کی کارروائیوں، طیاروں، ڈرون کشتیوں، چپچپی بارودی سرنگوں اور پانی کے اندر اہداف سے نمٹنے کی کارروائیاں شروع کیں۔ ان مشقوں میں دھماکہ خیز مواد سے حفاظتی اقدامات کو لاگو کرنے کی بھی مشق کی جا رہی ہے۔

سعودی فضائیہ، اس کی امریکی ہم منصب اور حصہ لینے والے متعدد ممالک کی افواج نے بھی متعدد فضائی مفروضوں پر عمل درآمد کیا۔ خاص طور پر ڈرونز کے خلاف دفاعی انسدادی فضائی کارروائیاں اور ہوا سے ہوا میں ایندھن بھرنے کی کارروائیاں انجام دی گئیں۔ فضائیہ اور فضائیہ دفاع نے اپنے فضائی اہداف پر براہ راست حملہ کے لیے شوٹنگ میں حصہ لیا۔

واضح رہے یہ مشقیں ماہرین کی جانچ سے مشروط ہے تاکہ مقررہ اہداف کے حصول کو یقینی بنایا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں