کینیڈا میں لگی آگ کا دھواں ناروے تک پہنچ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ناروے کے ایک تحقیقی ادارے کے مطابق کینیڈا کے جنگلات میں لگنے والی آگ کا دھواں ہزاروں کلومیٹر دور واقع اس یورپی ملک تک پہنچ چکا ہے۔

ناروے کےماحول اور ماحولیاتی تحقیق کے ادارے NILU کے ایک محقق نکولائوس ایوانجیلو نے خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ کینیڈا میں لگنے والی جنگلاتی آگ کے سبب ہوا میں دھویں کی موجودگی کے آثار ملے ہیں۔

محقق کے مطابق یہ آثار جنوبی ناروے میں قائم برکینیز آبزویٹری میں بطور خاص دیکھنے کو ملے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ آگ کی شدت، ہوا کے رخ اور ہوا میں نمی کے تناسب میں تبدیلی کے سبب مختلف اوقات میں دھویں کی پیمائش کے مختلف نتائج سامنے آئے ہیں۔

نکولائوس کے مطابق "ابھی تک ہمیں کسی خطرے کا خدشہ موجود نہیں ہے۔ ہوا میں دھویں کے ذرات بہت کمزور ہیں اور ان میں غیر معمولی اضافے کا امکان موجود نہیں۔"

کینیڈا میں تاریخ کی سب سے بڑی آتش زدگی کے سبب 38 لاکھ ہیکٹر [82 لاکھ ایکڑ] رقبے پر جنگلات جل کر راکھ بن چکے ہیں جبکہ دسیوں ہزاروں لوگوں کو نقل مکانی کرنا پڑی ہے۔

اس وقت کینیڈا کی حدود میں 439 مختلف مقامات پر آتش زدگی جاری ہے جبکہ رواں سال کے دوران 2300 مقامات پر آگ لگنے کی رپورٹس موصول ہوئی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں