سوڈان میں 24 گھنٹے کی جنگ بندی ختم، خرطوم میں جھڑپیں،فائرنگ کی آوازیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان کے دارالحکومت خرطوم کے کچھ حصوں میں 24 گھنٹے سے جاری جنگ بندی کے خاتمے کے فوری بعد اتوار کو علی الصباح جھڑپوں اور توپ خانے سے گولہ باری کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں اور حریف فوجی دھڑوں کے درمیان گذشہ آٹھ ہفتوں سے جاری لڑائی میں ایک دن کا عارضی وقفہ ختم ہوگیا ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ دارالحکومت خرطوم کے ملحقہ دو شہروں میں سے ایک اُم درمان کے شمال میں صبح چھے بجے جنگ بندی ختم ہونے کے فوراً بعد لڑائی دوبارہ شروع ہو گئی تھی۔خرطوم اور اُم درمان کے ساتھ دریائے نیل کے سنگم پر تیسرا شہر بحری واقع ہے اور ان تینوں شہروں میں حالیہ خانہ جنگی کے دوران میں متحارب فورسز میں زیادہ شدید جھڑپیں ہوئی ہیں۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ دارالحکومت کے مشرقی مضافات میں شرق النیل کے علاقے میں توپ خانے سے فائرنگ کی گئی جبکہ خرطوم میں دھماکوں اور جھڑپوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

سوڈان کی فوج اور نیم فوجی سریع الحرکت فورسز (آر ایس ایف) کے درمیان 15 اپریل کو لڑائی چھڑ گئی تھی۔جنرل عبدالفتاح البرہان کے زیرقیادت فوج اور جنرل محمد حمدان دقلو المعروف حمیدتی کے زیرقیادت آر ایس ایف کے درمیان سویلین حکمرانی کے لیے انتقالِ اقتدار کے بین الاقوامی حمایت یافتہ منصوبے پر اختلافات پائے جاتے ہیں اور وہ دونوں ایک دوسرے پر اس کی خلاف ورزیوں کے الزامات عاید کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں