سعودی ولی عہد نے شہری لین دین کے قانون کی منظوری دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی ولی عہد اور کابینہ کونسل کے صدر شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے شہری لین دین کے قانون (شہری قانون) کی منظوری کا اعلان کیا ہے۔انھوں نے شوریٰ کونسل کے قانون کا جائزہ لینے کے بعد کابینہ کی جانب سے اس کی منظوری دی ہے۔

سول ٹرانزیکشنز قانون 8 فروری،2021 کو اعلان کردہ خصوصی قانونی اصلاحات میں شامل تیسرا قانون ہے۔سعودی ولی عہد نے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے قانون سازی کے نظام کی ترقی میں مسلسل تعاون کیا جس سے تمام شعبوں میں قومی ترقی میں مدد ملے گی اورمملکت میں مزید ترقی اور خوش حالی آئے گی۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق انھوں نے کہا کہ طویل عرصے سے منتظر شہری لین دین کا قانون خصوصی قانون سازی میں ایک بڑی تبدیلی کی نمایندگی کرتا ہے۔ یہ قانون جدید ترین بین الاقوامی قانونی رجحانات اور عدالتی بہترین طریقوں کے مطابق اور شریعت کی دفعات اور مقاصد کی روشنی میں تیار کیا گیا تھا۔اس میں مملکت کی ذمے داریوں اور تقاضوں کو مدنظر رکھا گیا جو بین الاقوامی معاہدوں سے جنم لیتی ہیں جن میں مملکت فریق ہے۔

انھوں نے وضاحت کی کہ یہ قانون جائیداد کی ملکیت کے تحفظ، معاہدوں کے استحکام اور جواز،حقوق اور ذمے داریوں کے ذرائع اوراثرات کی شناخت اور قانونی پوزیشنوں کی وضاحت کے اصولوں کو بڑھانے کی ضرورت سے متاثر ہے۔اس سے کاروباری ماحول پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے،اسے مزید پُرکشش بنایا جائے گااور معاشی سرگرمیوں کے ریگولیشن،مالی حقوق کے استحکام اور سرمایہ کاری کے فیصلے کرنے میں مدد ملے گی۔اس کے علاوہ شفافیت میں اضافہ ہوگا اور شہری لین دین سے متعلق فوری عدالتی فیصلوں کی راہ ہموار ہوگی اورعدالتی صوابدید میں تضاد کو کم سے کم کیا جائے گا تاکہ فوری انصاف حاصل کیا جاسکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں