ایمرجنسی: لڑکی استنبول سے نیویارک جاتے ترکش ایئر لائن کی پرواز میں دم توڑ گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

استنبول سے نیویارک جاتے ہوئے ترکش ایئر لائنز کے طیارے میں ایک 11 سالہ لڑکی طبی ایمرجنسی کا شکار ہو کر چل بسی۔ بچی اپنے خاندان کے ساتھ سفر کر رہی تھی اور مبینہ طور پر پرواز کے دوران ہوش کھو بیٹھی تھی۔

امریکی خبر رساں ادارے سی بی ایس نیوز کے مطابق ترکش ایئرلائن کے عملے نے طیارے میں موجود ڈاکٹر سے مدد کے لیے کہا اور اس دوران پائلٹ نے ہنگری میں ہنگامی لینڈنگ کے لیے طیارے کا رخ موڑ دیا۔

ترکش ایئرلائنز نے ایک بیان میں بتایا کہ ہمارے کیبن کریو نے جہاز میں موجود کسی بھی ڈاکٹر کے لیے پی اے سسٹم پر اعلان کیا اور فلائٹ کے کپتان نے فوری طور پر طیارہ بوڈاپیسٹ کی طرف موڑ دیا۔ ہمارے مسافروں میں موجود ایک ڈاکٹر نے صورتحال کا جائزہ لیا اور دل کا مساج کیا اور طیارے نے ہنگری میں ہنگامی لینڈنگ کی ۔

ڈاکٹر نے طیارے میں لڑکی کو زندہ کرنے کی کوشش کی۔ طیارہ بوڈاپیسٹ فیرنک لِزٹ انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر اترا تو ہنگامی طبی کارکنوں نے فوری طور پر لڑکی کو سنبھالنے کی کوشش اپنے ذمہ لے لی۔ بوڈاپیسٹ ایئرپورٹ نے ایک بیان جاری کیا جس میں کہا گیا کہ لڑکی کی جان بچانے کے لیے تیز رفتار مداخلت کے باوجود وہ نہیں بچ پائی۔

لڑکی کا خاندان بوڈاپیسٹ میں ٹھہرا۔ پرواز چار گھنٹے سے زیادہ تاخیر سے نیویارک کی منزل پر پہنچی۔ یہ واضح نہیں ہوا کہ کس میڈیکل ایمرجنسی کی وجہ سے لڑکی کی موت واقع ہوئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں