بھارتی فوج میں اہل کاروں اور افسروں کی خودکشیوں کی سینچری مکمل ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بھارتی افواج میں ہر تیسرے روز ایک خودکشی جبکہ سالانہ 100 سے زائد خودکشی کے واقعات پیش آتے ہیں جن میں اکثر جموں و کشمیر میں ہوتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق 2001 سے اب تک مختلف واقعات میں 3300سے زائد بھارتی فوجی خودکشی کر چکے ہیں۔ صرف پچھلے 5 سالوں میں 800 سے زائد بھارتی جوانوں نے بالا افسران کے رویے سے تنگ آکر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔

23 جنوری 2023 کو کرنل کھنہ نے پنکھے سے لٹک کر خود کشی کر لی جبکہ 9جنوری 2023 کو فیروز پور میں لیفٹیننٹ کرنل نشانت نے بیوی کو گولی مار کر خود کشی کر لی۔

مرد تو مرد بھارتی فوج میں خواتین افسران بھی خود کشی پر مجبور ہیں۔ 2006 میں لیفٹیننٹ سشمیتا چکروتی نے بھرتی کے صرف 10ماہ بعد اپنی جان لے لی تھی۔ سشمیتا کے مطابق بالا افسران اُسے رات گئے ڈانس پارٹیوں اور ناجائز مطالبات کے لیے مجبور کرتے تھے۔

اکتوبر 2019 کو پُونا میں لیفٹیننٹ کرنل رشمی مشراء نے دوپٹے سے پھندہ ڈال کر جبکہ دسمبر 2016 میں جموں میں میجر انیتا کماری نے سر پر گولی مار کر زندگی کا خاتمہ کر دیا تھا۔

اسوی طرح، 2007 میں کیپٹن نیہا راوت نے اپنے میجر جنرل لال پر جنسی ہراسگی کا الزام عائد کیا تھا، 2007 سے اب تک بھارتی افواج میں خواتین افسران کے ساتھ زیادتی اور جنسی ہراسگی کے 1243 واقعات رپورٹ ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں