سعودی عرب میں مساجد کے میناروں کو مواصلاتی ٹاورز کے لیے استعمال کرنے کی اجازت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

سعودی عرب میں حال ہی میں، رہائشی عمارتوں کی چھتوں کے ساتھ ساتھ مساجد کے میناروں کو وائر لیس کمیونیکیشن اور براڈکاسٹ ٹاورز کے لیے استعمال کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

روزنامہ عکاظ کے مطابق سعودی وزارت بلدیات، دیہی امور اور ہاؤسنگ کی جانب سے یہ اجازت وائر لیس کمیونیکیشن ٹاورز اور اینٹینا کی ضروریات کے حتمی مسودے کے مطابق آتی ہے، جسے اس نے قومی مسابقتی مرکز کے "استصلاع" پلیٹ فارم پر پیش کیا تاکہ اس کے بارے میں عوامی رائے حاصل کی جا سکے۔

اس کا مقصد مواصلاتی عمل کو تیز کرنا ہے تاکہ اس سے فرد اور معاشرے کی خواہشات اور عمومی اہداف کو ایک ساتھ حاصل کیا جا سکے اور اس شعبے میں سرمایہ کاروں کی مدد کی جا سکے۔

فوجی حکام کی منظوری

کمیونیکشن ٹاور کے قیام کے لیے اہم تقاضوں میں اشارہ کیا گیا ہے کہ اگر ٹاور کا مقام کسی فوجی علاقے یا ادارے کے قریب ہے تو اس ادارے سے منظوری حاصل کرنا ضروری ہے۔

لائسنس جاری کرنے، تجدید کرنے، ترمیم کرنے، معطل کرنے اور منسوخ کرنے کا طریقہ کار میونسپل لائسنسنگ کے طریقہ کار کے نظام کے مطابق ہے، اور لائسنس جاری کرنے سے پہلے سول ڈیفنس کی منظوری حاصل کرنا ضروری ہے۔

میونسپل لائسنس حاصل کیے بغیر کام شروع کرنا منع ہے، اور نئے ٹاور کی تعمیر کے لیے نگران اتھارٹی کی منظوری لینا بھی ضروری ہے۔

وائرلیس کمیونیکیشن ٹاورز، ریلے اسٹیشنز، اور اینٹینا کے لیے مقامات ، مواصلات کے لیے مختص کردہ سہولیات ہوں گی یا سرمایہ کاری، تجارتی یا رہائشی تجارتی استعمال کے لیے مختص خالی زمین ہوگی ،جس میں زمین کے پلاٹ کا پورا یا بعض حصہ، عوامی پارک، کھیل کے میدان، پارکنگ کی جگہیں، مساجد سے ملحق چوک، تعلیمی اور خدمت کی سہولیات سے متصل چوک، گلیاں ، فٹ پاتھ، مسجد کے مینار، خدمت کی سہولیات کی چھتیں (غیر رہائشی)، رہائشی عمارتوں کی چھتیں، زرعی اور صنعتی استعمال کے لیے مختص کی گئی زمین شامل ہیں۔

نئے ٹاورز کی تنصیب وزارت کی طرف سے جاری کیے گئے ماحولیاتی تحفظات کو مدنظر رکھتے ہوئے ہونی چاہیے، اور شاہراہوں اور علاقائی سڑکوں کے اطراف پر اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ سڑک سے دور رہیں۔

پروجیکٹ میں اونچائیوں، تعمیراتی تناسب اور رکاوٹوں کا تعین کیا گیا ہے، اور آپریٹر کی تکنیکی ضرورت کے مطابق خالی زمینوں پر ٹاورز کی اونچائی زیادہ سے زیادہ 90 میٹر ہے، اور عمارتوں کی چھتوں کے اوپر نصب ٹاورز کی اونچائی ضرورت کے مطابق 15 میٹر سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔

رہائش کے لیے عمارتوں کی چھتوں پر ٹاور اور اوپری ملحقہ سطح کے درمیان ہٹاؤ دو میٹر سے کم نہیں ہونا چاہیے، اور زمینوں پر تعمیر کیے گئے ٹاورز کی تعمیر کے وقت خطے کے لیے منظور شدہ عمارتی ضوابط کی پابندی ہونی چاہیے۔ تعمیراتی تقاضوں میں یہ شامل ہے کہ بجلی کی ترسیل اور تقسیم کے نیٹ ورک کی کلیئرنس کی جگہوں کے اندر کوئی عمارت نہیں بنائی جانی چاہیے۔

پروجیکٹ نے اس بات پر زور دیا کہ آپریٹر کو منظوری کے لیے مجاز سیکریٹریٹ کے ساتھ ہم آہنگی کے بعد شہری ماحول کے لیے موزوں ڈیزائن کا استعمال کرنا چاہیے، اور اس بات کو مدنظر رکھتے ہوئے کہ چوکوں، باغات اور پارکنگ لاٹوں میں واقع کمیونیکیشن ٹاورز کناروں پر ہیں درمیان میں نہیں ہیں۔ ٹاورز کے اردگرد ایک کاسمیٹک باڑ لگائی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں