شاہ سلمان کے زیر صدارت کابینہ کا اجلاس،ضیوف الرحمٰن کی عمدہ میزبانی کے عزم کا اعادہ

سعودی عرب اور ایران کے درمیان مذاکرات کے بعد تازہ پیش رفت پر تبادلہ خیال،متعدد سمجھوتوں کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کے زیر صدارت جدہ میں سعودی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا۔اجلاس کے آغاز میں شاہ سلمان نے دنیا بھر سے حج کے لیے آنے والے اللہ کے مہمانوں کو خوش آمدید کہا اوران کی شاندار میزبانی کے عزم کا اعادہ کیا اور کہا کہ یہ ملک مسجدِ حرام اور مسجدِ نبوی کے زائرین کی خدمت کرنے اور ان کی حفاظت کو یقینی بنانے میں فخر کا اظہار کرتا ہے۔

کابینہ نے سعودی ویژن 2030 کے اہداف کے مطابق حجاج کرام کی آمد کو آسان بنانے اور انھیں اعلیٰ معیار کی خدمات مہیا کرنے کے لیے ان کے امور سے متعلق حکام کی کوششوں کو سراہا اور اس کے ساتھ ساتھ دونوں مقدس مساجد اور دیگر مقدس مقامات کے لیے مملکت کے تاریخی منصوبوں کا بھی جائزہ لیا۔

اجلاس کے بعد سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کو دیے گئے ایک بیان میں وزیر مملکت، کابینہ کے رکن برائے امورشوریٰ کونسل اور قائم مقام وزیر برائے میڈیا ڈاکٹر اعصام بن سعد بن سعید نے بتایا کہ کابینہ کو مملکت کی خارجہ پالیسی کی سرگرمیوں بالخصوص دیگر ممالک کے ساتھ تعاون کو مضبوط بنانے اور تمام شعبوں میں وسیع افق کی جانب مشترکہ کام کو آگے بڑھانے کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔

کابینہ کو خادم الحرمین الشریفین کی ہدایات کی تعمیل میں ولی عہد اور وزیراعظم شہزادہ محمد بن سلمان کے دورۂ فرانس سے متعلق آگاہ کیا گیا اور دونوں ممالک کے درمیان نمایاں تعلقات اور انھیں تمام شعبوں میں مضبوط بنانے کے طریقوں کو سراہا گیا۔

کابینہ نے سعودی عرب اور ایران کے درمیان مذاکرات کے بعد ہونے والی تازہ پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا اور دونوں ممالک کے مابین سفارتی اور قونصلر تعلقات کی بحالی کے عمل میں پیش رفت اور مشترکہ مفادات کے متعدد علاقائی اور بین الاقوامی امور پر تعاون کا جائزہ لیا۔

کابینہ نے ان ممالک کا بھی شکریہ ادا کیا جنھوں نے ایکسپو 2030 کی میزبانی کے لیے الریاض کی کوشش کی حمایت کی۔ یہ عالمی نمائش مملکت کو دنیا کے دیگر ممالک اور عوام کے ساتھ اپنی غیر معمولی تبدیلی کی کہانی شیئر کرنے کا موقع فراہم کرے گی اور ایک ایسا پلیٹ فارم فراہم کرے گی جو عالمی برادری کو بہتر مستقبل کے لیے قریبی تعاون اور جدید حل تیار کرنے کے قابل بنائے اور دنیا کو درپیش چیلنجوں سے نمٹنے میں معاون ثابت ہو۔

کابینہ نے اپنے ایجنڈے میں شامل دیگر متعدد امور پر بھی غور کیا اوراقتصادی و ترقیاتی امور کی کونسل، سیاسی و سلامتی امور کی کونسل، کابینہ کی جنرل کمیٹی اور کابینہ کے ماہرین کے بیورو کے فیصلوں کا جائزہ لیا۔

کابینہ نے اجلاس میں متعدد فیصلے کیے ہیں اورسعودی عرب اور رومانیہ کی حکومتوں کے درمیان شہری دفاع اور شہری تحفظ کے شعبے میں تعاون کے لیے مفاہمت کی یادداشت کے مسودے کے بارے میں بات چیت کرنے کے لیے وزیر داخلہ یا ان کے نائب کو اختیار دیا ہے۔

اس کے علاوہ کابینہ نے کویت کے ساتھ ماحولیات کے تحفظ، بحالی اور تحفظ کے شعبے میں مفاہمت کی یادداشت کے مسودے پربات چیت کے لیے وزیرماحول یا ان کے نائب کو اختیار دیا ہے،جمہوریہ گنی کی اعلیٰ تعلیم، سائنسی تحقیق اور جِدّت طرازی کی وزارت کے ساتھ سائنسی اور تعلیمی تعاون کی یادداشت کی منظوری دی ہے۔

نیز کابینہ نے اشیاء کی بین الاقوامی فروخت کے معاہدوں سے متعلق اقوام متحدہ کے کنونشن میں سعودی عرب کی شمولیت کی منظوری دی ہے۔اس کے علاوہ مملکت سعودی عرب کی ریاستی سلامتی کی صدارت اور مراکش کی نظامت عامہ برائے مطالعات اور دستاویزات کے درمیان انسداد دہشت گردی اور اس کی مالی اعانت کے شعبے میں تعاون کے معاہدے کی منظوری دی ہے۔اس کے علاوہ کابینہ نے بعض اعلیٰ عہدے داروں کی اگلے گریڈوں میں ترقیوں کی منظوری دی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں