آبدوز کی تلاش، کینیڈیئن طیارے کو ٹائی ٹینک ڈوبنے کے مقام سے سگنلز موصول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

غرقاب جہاز ٹائی ٹینک کی سیر کو جانے والی لاپتا آبدوز ٹائٹین کی تلاش جاری ہے، اس حوالے سے برطانوی اخبار نے بتایا ہے کہ کینیڈا کے طیارے کو ٹائی ٹینک ڈوبنے کے مقام سے سگنلز موصول ہوئے ہیں۔

برطانوی اخبار کا دعویٰ ہے کہ سگنل ہر 30 منٹ بعد موصول ہو رہے ہیں، امریکی ہوم لینڈ سکیورٹی کے ساتھ ای میل کے تبادلے میں یہ بات سامنے آئی ہے۔

برطانوی اخبار کے مطابق سمندر میں موجود جدید ترین ’سونو بوائیز‘ سگنل جانچنے میں کامیاب رہے ہیں۔ غرقاب ٹائی ٹینک کی سیر کیلئے گئی لاپتہ آبدوز میں 2 پاکستانی بھی سوار تھے۔

شہزادہ داؤد
شہزادہ داؤد

ٹائی ٹینک جہاز 15 اپریل 1912ء کو انگلینڈ سے نیویارک آتے ہوئے برفانی تودے سے ٹکرا کر ڈوب گیا تھا، حادثے میں 1500 افراد ہلاک ہو گئے تھے، تاہم جہاز کا ملبہ 1985ء میں ملا تھا۔

ٹائی ٹینک کا ملبہ بحرِ اوقیانوس میں 12 ہزار 500 فٹ کی گہرائی میں موجود ہے، جو نیو فاؤنڈ لینڈ اور کینیڈا کے ساحل سے تقریباً 600 کلو میٹر دور ہے۔

صدر ایکسپلورر رچرڈ گیریٹ کا اس حوالے سے جاری کیے گئے بیان میں کہنا ہے کہ ڈیٹا کی بنیاد پر کہتا ہوں کہ زندگی کے اشارے ملے ہیں۔

امریکی حکومت کے درمیان رابطوں میں انکشاف ہوا ہے کہ لاپتہ آبدوز کی تلاش کے لیے اضافی سونر ڈیوائسز کے استعمال کے بعد بھی بینگنگ ساؤنڈ سنی گئی۔ امریکی میمو کے مطابق لاپتہ آبدوز کی تلاش کے دوران اضافی صوتی اثرات سنے گئے ہیں۔

واضح رہے کہ بحرِاوقیانوس میں سیاحوں کی لاپتا آبدوز ٹائٹین کی تلاش جاری ہے۔ برطانوی اخبار کے مطابق حکام نے رپورٹ کی تصدیق نہیں کی ہے۔ لاپتا آبدوز کی تلاش میں امریکا اور کینیڈا کے بحری جہاز اور طیارے حصہ لے رہے ہیں۔

ٹائٹن کب لاپتا ہوئی

21 فٹ کی آبدوز ٹائٹن مقامی وقت کے مطابق اتوار کی صبح 4 بجے روانہ ہوئی تھی مگر پونے 2 گھنٹے بعد ہی اس کا رابطہ منقطع ہو گیا تھا۔

ٹائٹن کی خامی یہ ہے کہ یہ خود اپنی سمت متعین کرنے سے قاصر ہے، یہ سمندر کی سطح پر موجود جہاز سے ملنے والے ٹیکسٹ میسیجز پر انحصار کرتی ہے۔

امریکی حکام نے اس میں موجود پانچوں افراد کی شناخت ظاہر نہیں کی تاہم تصدیق کی ہے کہ ان میں سے 1 پائلٹ ہے جبکہ 4 مشن اسپیشلسٹ ہیں۔

لاپتا آبدوز میں 2 پاکستانی بھی سوار

گذشتہ روز برطانوی میڈیا نے انکشاف کیا کہ ٹائی ٹینک کے ملبے کی سیر کرانے والی لاپتہ آبدوز میں 2 پاکستانی بھی سوار تھے۔

اہل خانہ نے جاری کیے گئے بیان کے ذریعے بتایا ہے کہ لاپتہ آبدوز میں پاکستانی تاجر شہزادہ داؤد اور ان کا بیٹا سلیمان بھی سوار تھے، جن سے رابطہ منقطع ہو گیا ہے۔

آبدوز ٹائٹن میں 30 گھنٹے کی آکسیجن

برطانوی میڈیا کے مطابق شہزادہ داؤد اور ان کے بیٹے سلیمان ٹائی ٹینک کی باقیات دیکھنے آبدوز میں گئے تھے۔

شہزادہ داؤد برطانیہ میں مقیم اور ایس ای ٹی آئی انسٹی ٹیوٹ میں ٹرسٹی ہیں، وہ ایک نجی کمپنی میں بطور نائب چیئرمین خدمات انجام دے رہے ہیں۔

برطانوی میڈیا کے مطابق ٹائٹن میں موجود افراد میں اسی کمپنی اوشین گیٹ کے سی ای او اسٹاکٹن رش Stockton Rush، فرانسیسی بحریہ کے سابق اہلکار پال ہنری نارجیولیٹ PH Nargeolet اور گینیز ورلڈ ریکارڈ یافتہ برطانوی ارب پتی ہیمش ہارڈنگ Hamish Harding بھی موجود ہیں۔

لاپتہ ٹائی ٹینک سیاحتی آبدوز میں تقریباً 30 گھنٹے کی آکسیجن باقی، تلاش جاری
لاپتہ ٹائی ٹینک سیاحتی آبدوز میں تقریباً 30 گھنٹے کی آکسیجن باقی، تلاش جاری

خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ ٹائٹن بحیرِ اوقیانوس میں ساڑھے 12 ہزار فٹ گہرائی میں موجود ٹائی ٹینک جہاز کے ملبے میں ممکنہ طور پر پھنس گئی ہے۔

امریکا کی ریاست میساچوسٹس میں کیپ کوڈ سے 9 سو میل مشرقی علاقے میں ممکنہ طور پر موجود اس ٹائٹن کو ریسکیو کرنے کے لیے امریکا اور کینیڈا نے طیارے اور جہاز بھیجے ہیں۔

امریکی بحریہ کے افسر ریئر ایڈمرل جان ماؤجر نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ ہر ممکن کوشش جاری ہے مگر ابھی یہ واضح ہی نہیں ہو پایا کہ ٹائٹن کس مقام پر ہے، یہ بھی کہ اگر ٹائٹن ملبے میں پھنس گئی تو کوسٹ گارڈ اسے نکال پائیں گے یا نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں