پیرس میں دھماکا، 30 افراد زخمی ،چار کی حالت تشویش ناک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فرانس کے دارالحکومت پیرس کے پانچویں علاقے میں بدھ کے روز دھماکے میں 30 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ان میں چار کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔یہ دھماکا تاریخی وال ڈے گریس فوجی اسپتال کے قریب ہوا ہے۔

پیرس کے پولیس سربراہ لوراں نونیز نے صحافیوں نے بتایا کہ دھماکے کے نتیجے میں عمارت میں لگی آگ پر قابو پالیا گیا ہے۔انھوں نے بتایا کہ اس واقعے میں کل تیس افراد زخمی ہوئے ہیں اور دولاپتا ہیں۔متاثرہ عمارت کے ملبے سے ان کی تلاش کی جارہی ہے۔

پیرس پولیس کے ایک افسر نے بتایا ہے کہ دھماکے کے نتیجے میں ایک عمارت کا سامنے والا حصہ سڑک پر گر گیا تھا اور بہت سے فائر فائٹرز اور پولیس اہلکار امدادی سرگرمیوں کے لیے موقع پر موجود تھے۔

فوری طور پر دھماکے کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی۔اس سے قبل علاقے کے میئر نے ٹویٹر پر گیس دھماکے کا اعلان کیا تھا۔فرانس کے وزیر داخلہ جیرالڈ ڈارمینن نے بتایا کہ پیرس کے پانچویں علاقے رو سینٹ جیکس میں جارڈن ڈو لکسمبرگ اور سوربون یونیورسٹی کے قریب عمارت میں آگ لگ گئی تھی۔

انھوں نے مزید بتایا کہ فائر فائٹروں نے پیرس کے بائیں کنارے میں لگی آگ پر قابو پا لیا ہے۔ دھماکے کے بعد گنبدوں والی پینتھیون یادگار سے دھواں بلند ہونے لگا تھا جس کے بعد آس پاس کی عمارتوں کو خالی کرا لیا گیا۔

خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق پیرس پولیس کی ترجمان لبنیٰ عطا کا کہنا ہے کہ آگ کی وجہ کا تعیّن کرنا قبل از وقت ہوگا اور وہ ان اطلاعات کی تصدیق نہیں کر سکتیں کہ آگ گیس دھماکے کی وجہ سے لگی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں