جوابی حملے میں اب تک یوکرین کے 245 ٹینک اور 678 بکتر بند گاڑیاں تباہ کردیں: پوتین

روس کیخلاف حقیقی جنگ مغرب لڑ رہا اور پڑوسی ملکوں میں تنازعات کو ہوا دے رہا: روسی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

روس کے صدر ولادیمیر پوتین نے بدھ کو اعلان کیا ہے کہ جوابی حملے کے آغاز سے لے کر اب تک ہم یوکرین کے 245 ٹینکس اور 678 بکتر بند گاڑیاں تباہ کرچکے ہیں۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ جلد سارمات میزائل بھی روسی افواج کو دستیاب ہوکر خدمات انجام دیں گے۔

روسی صدر نے فوج کالجوں سے تعلیم مکمل کرنے والے طلبہ کے کی گریجویشن کے جشن کی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ روسی مسلح افواج کو مضبوط بنانا ہماری اولین ترجیح رہے گی۔

پوتین نے موجودہ چیلنجوں اور یوکرین میں روسی خصوصی فوجی آپریشن کے دوران حاصل ہونے والے تجربے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ روسی مسلح افواج کی مزید ترقی کی ضرورت ہے کیونکہ اس عمل کا اہم پہلو ایٹمی سہ رخی ترقی ہے جو روسی قومی سلامتی اور عالمی استحکام کو یقینی بنانے کے لیے کلیدی حیثیت رکھتا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ آپریٹنگ یونٹس میں سے نصف کے پاس اب جدید "یارِس" سسٹمز کے ساتھ ساتھ "ایوانگارڈ" ہائپرسونک میزائل بھی ہیں۔ بھاری ’’ سارمات‘‘ میزائل سسٹم قریبی خدمت میں داخل ہو جائیں گے۔

پوتین نے مزید کہا کہ سوویت یونین گورشکوف فلیٹ کا ایڈمرل فریگیٹ گزشتہ جنوری میں سروس میں داخل ہوا جو روسی بحریہ کے سمندر اور دور دراز سمندروں سے جدید ترین گائیڈڈ میزائل ہتھیار لے کر گیا۔ جس کے اوپر جدید ہائپرسونک میزائل ’’ تیسرکون‘‘ موجود ہیں۔

دریں اثنا روسی وزیر دفاع سرگئی شوئیگوو نے کہا کہ مغرب روس کے خلاف حقیقی جنگ چھیڑ رہا ہے اور پڑوسی ممالک میں تنازعات کو ہوا دے رہا ہے اور روسی فوج ملک کی خودمختاری اور سلامتی کو مضوبط کرنے کی ہر ممکن کوشش کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں