دوران حج سن سٹروک سے نمٹنے کے لیے 217 بیڈز اور ہزار سے زیادہ مسٹ فینز فراہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں حج کے مناسک کل پیر 26 جون کو شروع ہو رہے ہیں۔ گرمی کی شدت کو مد نظر رکھتے ہوئے سعودی

وزارت صحت نے ہیٹ سٹروک کے مریضوں کے لیے 217 بیڈز مختص کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ان میں سے 166 بیڈز مقدس مقامات کے ہسپتالوں میں اور 51 مکہ مکرمہ میں موجود ہوں گے۔

وزارت صحت نے مزید ایک ہزار سے زیادہ مسٹ فینز بھی فراہم کردیے ہیں۔ پانی کی پھوار پھینکنے والے یہ پنکھے گرمی کے دباؤ اور سن سٹروک کے معاملات سے نمٹنے کے لیے کارآمد ثابت ہوئے ہیں۔ ان پنکھوں کے ساتھ صحت کی تمام سہولیات فراہم کی گئی ہیں۔ سال 1444 کے اس حج کے دوران اتفاق سے مکہ مکرمہ، منیٰ، عرفات اور مزدلفہ میں درجہ حرارت زیادہ رہنے کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے۔

وزارت صحت نے ہیٹ سٹروک کے معاملات سے نمٹنے کے لیے طبی کارکنوں کو متعدد کورسز اور فیلڈ ٹریننگ پروگرام بھی کرائے ہیں۔

وزارت صحت نے اس دوران حجاج کرام کے لیے اپنے آگاہی اور تعلیمی پیغامات کو بھی تیز کردیا ہے۔ حجاج کرام کو گرمی کے دباؤ اور سن سٹروک سے بچنے کے طریقوں کی آگاہی دی گئی ہے۔ خاص طور پر حجاج کرام کو گرم سورج کے سامنے براہ راست آنے سے گریز کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں