برطانوی پولیس کے مواصلاتی نظام میں فنی خرابی سے ہیلپ لائن سروس معطل، شہری خوف زدہ

برطانوی پولیس اور ایمرجنسی سروس کےمشترکہ ہیلپ لائن نمبر ’999‘ میں فنی خرابی کے بعد متبادل نمبر جاری، جرائم پیشہ عناصرسے عوام پریشان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

برطانیہ کی تاریخ میں پہلی بار پولیس اور ایمرجنسی سروس کے ہیلپ لائن ’999‘ میں پیدا ہونے والی فنی خرابی کی وجہ سے پورے ملک میں پولیس کا نظام جام ہو کر رہ گیا۔

ہیلپ لائن میں آنے والی خرابی کی وجہ سے حکام نے عارضی طور پر متبادل ہیلپ لائن نمبر جاری کیا ہے مگر شہریوں سے کہا ہے کہ وہ ضروری کال کے سوا اس پر بات کرنے سے گریز کریں۔ دوسری طرف خرابی کا شکار ہونے والی لائن کی مرمت کا کام بھی جاری ہے۔

اُدھر پولیس کا ایمرجنسی ہیلپ لائن نمبر خراب ہونے کے بعد جرائم پیشہ عناصر کی وجہ سے شہریوں میں خوف وہراس پایا جا رہا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ انہیں خدشہ ہے کہ پولیس کے رابطہ نمبر میں خرابی کے موقعے سے جرائم پیشہ افراد فائدہ اٹھا کر اپنے جرائم کی کارروائیاں کرسکتے ہیں۔

لندن پولیس کی طرف سے جاری ایک بیان میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ہیلپ لائن نمبر 999 میں خرابی کے بعد ہنگامی طور پر 101 رابطہ نمبر جاری کیا گیا ہے۔ ساتھ ہی پولیس نے کہا ہے کہ شہری اصل رابطہ نمبر کے بحال ہونے کا انتظار کریں اور ہنگامی ہیلپ لائن نمبر پر ناگزیر کال کے سوا فون نہ کریں۔

حالیہ برسوں میں یہ پہلا موقع ہے کہ برطانیہ میں اس نوعیت کی فنی خرابی واقع ہوئی ہے۔ برطانوی شہریوں کو ہنگامی نمبر پر پولیس کو کال کرنے، فوری رپورٹ جمع کرانے، یا مدد طلب کرنے میں کبھی کوئی مسئلہ نہیں ہوا تھا۔

لندن کی میٹروپولیٹن پولیس نے اتوار کی صبح 8 بجکر 20 منٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ "ایک تکنیکی خرابی جس کی وجہ سے پولیس فورسز کے ادارے متاثر ہوئے ہیں اور ان کے ہیلپ لائن سروس 999 معطل ہوئی ہے۔

پولیس نے مزید کہا کہ "مزید اطلاع تک براہ کرم ہنگامی صورت حال میں 101 پر کال کریں۔ براہ کرم صرف ہنگامی حالات میں کال کریں اور بعد میں کوئی غیر ہنگامی کال کرنے کے لیے انتظار کریں۔"

ویسٹ یارکشائر پولیس نے بھی ٹویٹ کیا کہ "ملک بھر میں مواصلاتی نیٹ ورک کو 999 پر کال کرنے میں خرابی کا سامنا ہے۔ اگر آپ پولیس تک پہنچنے کی کوشش کر رہے ہیں اور رابطہ نہیں کر پاتے تو براہ کرم 101 پر کال کریں۔ طبی امداد کے لیے آپ کو 999. 111 پر کال کرنی چاہیے۔

اس خرابی نے برطانیہ میں تنازعہ کی لہر کو جنم دیا، جہاں بہت سے مبصرین نے خدشہ ظاہر کیا کہ یہ چھٹی ملک میں جرائم میں اضافے کا باعث بن سکتی ہے، اور کچھ جرائم پیشہ افراد یا غیر قانونی افراد اس کا فائدہ اٹھا کر کچھ سرگرمیاں انجام دے سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں