قبرص میں اسرائیلیوں کے خلاف ایرانی پاسداران انقلاب کا حملہ ناکام بنادیا گیا

ایرانی انقلابی گارڈز سے منسلک سیل نے اسرائیلی اہداف اور یہودی شہریوں پر حملے کا منصوبہ بنایا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

قبرص کے حکام نے ملک میں اسرائیلیوں کے خلاف ایرانی پاسداران انقلاب کے حملے کو ناکام بنا دیا ہے۔

اسرائیلی پبلک براڈکاسٹنگ اتھارٹی سے وابستہ "کان" چینل نے بتایا کہ ایرانی پاسداران انقلاب سے منسلک ایک سیل نے قبرص میں اسرائیلی اہداف اور یہودی شہریوں پر حملے کا منصوبہ بنایا تھا۔ تاہم قبرص کے حکام نے امریکی اور اسرائیلی انٹیلی جنس کے تعاون سے اس حملے کو ناکام بنا دیا ہے۔

قبرصی اخبار ’’فل نیوز‘‘ نے نامعلوم ذرائع کے حوالے سے کہا کہ جمہوریہ قبرص کے علاقے میں دہشت گردی کی کارروائی کو روکا گیا ہے۔ اندازوں کے مطابق اس کارروائی کا مقصد یہودی نژاد شہریوں کو قتل کرنا تھا۔ اس منصوبے کی مجرم وہ انٹیلی جنس سروسز ہیں جو بظاہر ایرانی پاسداران انقلاب سے منسلک ہیں۔

ذرائع نے وضاحت کی کہ قبرصی انٹیلی جنس سروسز نے مغربی شراکت داروں، امریکہ اور اسرائیل کے ساتھ مل کر ایرانی کارروائی کو ناکام بنانے میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔

اسرائیلی اخبار ’’ یدیعوت احرونوت‘‘ نے قبرصی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ جزیرے کی انٹیلی جنس سروسز حالیہ مہینوں میں سیل کی نقل و حرکت پر نظر رکھے ہوئے تھی۔ ذرائع نے بتایا کہ انٹیلی جنس سروسز نے مرکزی مشتبہ شخص کی کڑی نگرانی کی جسے دیکھا گیا۔ اس نگرانی سے سے حملہ روکنے میں مدد ملی۔

اگرچہ مشتبہ شخص فرار ہونے میں کامیاب ہو گیا لیکن وہ سامان جو وہ حملہ کرنے کے لیے استعمال کرنے والا تھا سکیورٹی اداروں کو مل گیا۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ قبرص کے حکام مرکزی ملزم کے خلاف بین الاقوامی وارنٹ گرفتاری جاری کرنے پر غور کر رہے ہیں۔

واضح رہے اکتوبر 2021 میں قبرصی حکام نے ایک آذربائیجانی شہری کو روسی پاسپورٹ کے ساتھ گرفتار کیا جس نے اعتراف کیا تھا کہ وہ ایرانی پاسداران انقلاب کا ایجنٹ ہے اور اس نے اسرائیلی اہداف کے خلاف حملے کرنے کی منصوبہ بندی کی تھی۔ اس کے اہداف میں اسرائیلی تاجروں کو نشانہ بنانا بھی شامل تھا۔


مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں