امریکا، برطانیہ،فرانس کا حوثی ملیشیا سے ہتھیار پھینکنےاورعسکریت پسندی ترک کرنے پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

کل منگل کوامریکا، برطانیہ اور فرانس نے یمن میں حوثی گروپ سے ملک میں جاری فوجی آپشن ترک کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ سیاسی عمل کی طرف بات چیت شروع کی جائے۔ تینوں ممالک نے ایران نواز ملیشیا سے ہتھیار پھینکنے اور فوجی کارروائیاں بند کرنے پر زور دیا۔

تینوں ممالک کے ایک مشترکہ بیان میں حوثی گروپ پر الزام لگایا کہ وہ "تیل کی برآمدات کو روکنے کے ذریعے یمن میں خوفناک انسانی اور اقتصادی بحران کو بڑھا رہا ہے"انہوں نے حوثیوں سے مطالبہ کیا وہ کہ "یمن کی معیشت کو مزید نقصان پہنچانے والے کسی بھی اقدام گریز کریں۔"

تینوں ممالک نے حوثیوں پر زور دیا کہ وہ "کسی بھی فوجی آپشن کو مکمل طور پر ترک کر دیں۔ انہوں نے خبردارکیا کہ یمن میں حوثیوں کی طرف سے کسی بھی تنازع کی طرف واپسی بین الاقوامی برادری سے ان کی مکمل تنہائی کا باعث بنے گی۔"

بیان میں حوثیوں سے یہ بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ "یمن کے عوام کی ضروریات اور بنیادی حقوق کا خیال رکھیں اور امن کے حصول کی کوششوں میں تمام فریقوں کے ساتھ تعمیری انداز میں شریک ہوں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں