برطانوی فضائی کمپنی نے "ٹوائلٹ" کی وجہ سے خاتون کو سفر سے روک دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

برطانیہ کی ایک فضائی کمپنی نے ایک خاتون کو اپنی پروازوں میں سفر کرنے سے روک دیا جس پر خاتون مسافر حیران رہ گئی۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ خاتون نے طیارے میں غلط ٹوائلٹ کا استعمال کیا۔

دوسری طرف خاتون سیاح کو دوہری پریشانی کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ جس کمپنی کے طیارے پر وہ ایک لمبے سفر پر نکلی تھی اس نے اپنی کسی پرواز میں اسے واپس لینے سے انکار کر دیا تھا۔ اس پر خاتون کو متبادل فضائی کمپنی کے طیارے کی ٹکٹ لینا پڑی۔

برطانوی اخبار "ڈیلی ایکسپریس" کی طرف سے شائع کردہ رپورٹ "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کے مطالعہ سے گذری ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ معروف برطانوی ایئر لائن (TUI) جو کہ ملک کے سب سے بڑے ٹور آپریٹرز میں سے ایک ہے، نے ایک خاتون مسافر کو طیارے پر سفر سے روک دیا۔ رپورٹ کے مطابق کمپنی کا کہنا ہے کہ اس نے ہوائی جہاز میں غلط ٹوائلٹ استعمال کرنے کی وجہ سے اپنی پروازوں میں دوبارہ سفر کرنے سے روک دیا۔

اخبار کے مطابق ایک خاتون سیاح کو بتایا گیا کہ جب وہ جمیکا سے برطانیہ جانے والی واپسی کی پرواز کے لیے چیک ان کرنے گئی تو اسے (TUI) کے ساتھ سفر کرنے کی اجازت نہیں دی گئی، کیونکہ اس نے جہاز میں "غلط بیت الخلا" استعمال کیا تھا۔

خاتون مسافر وکٹوریہ ڈیوری مونٹیگو بے کی پرواز پر تھی اور اسے پرواز میں بیت الخلاء استعمال کرنے کی ضرورت تھی۔ پرواز کا دورانیہ چند گھنٹے تھا۔

ڈیوری ایک آٹسٹک خاتون ہیں۔ انہوں نے ہوائی جہاز کی گیلی کے قریب بیت الخلاء استعمال کرنے کا فیصلہ کیا کیونکہ ایک اور مسافر دوسرے بیت الخلاء میں کافی دیر سے تھا۔

44 سالہ خاتون کو دوسرے باتھ روم تک پہنچنے کے لیے جہاز کے اندر موجود کچن سے گذرنا پڑا۔ عملے نے ہدایات کی خلاف ورزی قرار دیا، کیونکہ وہاں کھانا تیار کیا جا رہا تھا اور مسافروں کو اندر جانے سے منع کیا گیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں