تشریق کے پہلے روز 71 ملین سے زیادہ اشیائے خورو نوش منیٰ پہنچائی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب میں حج کے مناسک ادا کیے جارہے ہیں۔ ایام تشریق کے پہلے دن حجاج کرام کے لیے 71 ملین 671 ہزار کھانے پینے کی اشیا مشعر منیٰ میں پہنچا دی گئی ہیں۔ ان اشیا میں دودھ اور جوس کے 39 ملین سے زائد پیکجز شامل تھے۔ 14 ملین اور 319 ہزار سے زیادہ سینکا ہوا سامان اور 667 ہزار سے زیادہ تیار کھانے تھے۔ مزید برآں 17 ملین 251 ہزار پانی کی بوتلیں اور 336 ہزار سے زیادہ برف کے سانچے منیٰ پہنچائے گئے۔

ایام تشریق قربانی کے دن کے بعد آنے والے تین روز ہوتے ہیں۔ یہ ذو الحج کی گیارہ ، بارہ اور تیرہ تاریخ کے تین دن ہوتے ہیں۔ جمعرات کو پاکستان میں ذو الحج کی 10 اور سعودی عرب میں 11 تاریخ اور ایام تشریق کا پہلا دن تھا۔

ایک قول کے مطابق لوگ ان دنوں میں قربانی کا گوشت دھوپ میں سکھایا کرتے تھے اس لیے ان دنوں کو ایام تشریق کا نام دے دیا گیا دوسرے قول کے مطابق چوں کہ عید کی نماز یقینا سورج کے طلوع ہونے یعنی شروق الشمس کے بعد ہی ادا کی جاتی ہے لہذا پہلے روز کے بعد آنے والے ان تمام دنوں کو ایام تشریق کا نام دے دیا گیا۔

سعودی وزارت صحت نے مقدس مقامات اور مکہ مکرمہ میں زائرین کے لیے سپلائی کی کثرت میں اضافہ کرنے کے لیے سپلائی چینز کو محفوظ بنانے کا خاص خیال رکھا ہے۔ اس کی فیلڈ مانیٹرنگ ٹیمیں سیلز آؤٹ لیٹس کی بھی نگرانی کرتی رہتی ہیں۔

صارفین کے تحفظ کے ضوابط کی تعمیل کی تصدیق کی جاتی ہے اور تجارتی خلاف ورزیوں کو کنٹرول کرنے کے لیے منیٰ اور مسجد حرام کے مرکزی علاقے میں تمام تجارتی اداروں پر نظر رکھی جاتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں