امریکہ کا لبنان پر اسرائیلی سرحد کے قریب حزب اللہ کے ٹھکانے ختم کرنے کا دباؤ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ نے لبنان کی حکومت اور فوج پر دباؤ ڈالا ہے کہ وہ اسرائیل کے سرحد پر واقع حزب اللہ کے ٹھکانوں کو ختم کردیں۔ نیوز ویب سائٹ ’’ ایکسیس‘‘ نے اپنی رپورٹ میں امریکی اور اسرائیلی حکام کے حوالے سے بتایا کہ حزب اللہ نے کئی ہفتے قبل سرحد پر اسرائیل کی جانب ایک چوکی قائم کی تھی۔

ایک سینیئر اسرائیلی اہلکار نے بتایا کہ حزب اللہ نے گزشتہ اپریل کی آٹھ تاریخ کو بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ بلیو لائن کے جنوب میں 30 میٹر کے فاصلے پر ایک ایسے علاقے میں ایک خیمہ لگایا جسے اقوام متحدہ "اسرائیلی علاقہ" سمجھتی ہے۔

امریکی اور اسرائیلی حکام نے کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ اور محکمہ دفاع (پینٹاگون) کے اہلکاروں نے لبنان میں اقوام متحدہ کی عبوری فورس، لبنانی حکومت اور فوج پر حزب اللہ کی یہ چوکی خالی کرانے کی ضرورت پر زور دیا۔

واضح رہے لبنانی حزب اللہ کے ارکان کی جانب سے گزشتہ ماہ کی گئی مشقوں کے بعد مغربی ذرائع نے ’’ العربیہ‘‘ کو بتایا تھا کہ ملیشیا دہشت گردی اور عسکری مقاصد کے حصول کے لیے لبنانی فوج کے انٹیلی جنس انفراسٹرکچر سے فائدہ اٹھا رہی ہے۔ حزب اللہ نے لبنان کے سرکاری انٹیلی جنس اداروں میں اپنے ایجنٹوں کو بھرتی کر رکھا ہے۔

واضح رہے جولائی 2006 میں لبنان کے خلاف اسرائیل کی طرف سے شروع کی جانے والی جنگ کے بعد سے زیادہ تر لبنانیوں نے حزب اللہ پر سخت تنقید کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں